روسی صدر کا شمالی کورین لیڈرکا پرتپاک استقبال، 40 سیکنڈ تک ’ہینڈ شیک‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روس کے صدر ولادیمیر پوتین نے بدھ کے روز روس کے جدید ترین خلائی راکٹ لانچ سائٹ ووستوچنی کاسموڈروم میں شمالی کوریا کے رہ نما کم جونگ ان کا پرتپاک استقبال کیا۔

صدر پوتین کہہ رہے تھے کہ " یہ ہمارا نیا خلائی اڈہ ہے اور اس میں مَیں آپ کو دیکھ کر بہت خوش ہوں۔" اس موقعے پر پوتین اور کم نے 40 سیکنڈ تک ہاتھ ملایا۔

ایک مترجم کے ذریعے کم نے پوتین کی دعوت اور پرتپاک استقبال پر شکریہ ادا کیا۔

سرکاری خبر رساں اداروں نے پوتین کے حوالے سے بتایا کہ روس شمالی کوریا کو مصنوعی سیٹلائٹ بنانے میں مدد کرے گا۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا وہ اور شمالی کوریا کے رہ نما سے ہتھیاروں کی فراہمی پر بات کریں گے تو انہوں نے کہا کہ وہ تمام مسائل پر بات کریں گے۔

جاپانی کیوڈو نیوز ایجنسی نے ایک نامعلوم روسی اہلکار کے حوالے سے بتایا ہے کہ روسی صدر اور شمالی کوریا کے رہ نما کی ملاقات بدھ کی سہ پہر روسی ووستوچنی خلائی مرکز میں متوقع ہے۔

کل منگل کو روس پہنچنے کے بعد شمالی کوریا کے رہ نما نے روس کے ساتھ تعلقات کی "اسٹریٹیجک اہمیت" پر زور دیا۔ ان کا یہ اپنی نوعیت کا منفرد اور انوکھا دورہ ہے جو انہوں نے اپنی نجی ٹرین کے ذریعے کیا۔

تاہم کم جونگ اُن کے اس دورے پر امریکا نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ روس شمالی کوریا کے درمیان اسلحے کی ممکنہ ڈیل خطرناک ہوسکتی ہے۔

کِم جو اتوار کی شام کو بکتر بند ٹرین میں سوار ہو کر پیانگ یانگ سے روانہ ہوئے تھے "COVID-19" وبائی بیماری کے آغاز کے بعد سے اپنا پہلا بیرون ملک سفر کر رہے ہیں۔ اس سے قبل انہوں نے سنہ2019ء میں ولادی ووستوک میں پوتین سے ملاقات کی تھی۔

ریا نووستی نیوز ایجنسی کے مطابق کریملن کے ترجمان نے تصدیق کی ہے کہ شمالی کورین لیڈر آنے والے دنوں میں خاص طور پر "حساس موضوعات" پر بات کریں گے۔

تاہم روسی میڈیا نے فوٹیج دکھائی جس میں کم کا شمالی کوریا کے ساتھ روس کی سرحد کے قریب خاسان ٹرین اسٹیشن پر استقبال کیا گیا، جس میں ایک سرکاری وفد نے ان کا استقبال کیا اور گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔

شمالی کوریا کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے کہا کہ کم نے اپنےاستقبال کرنے والوں کو بتایا کہ ان کا دورہ روس کے ساتھ اپنے تعلقات کی "ترجیح جو (ان کا ملک) سٹریٹجک اہمیت کو دیتا ہے" کا "واضح اظہار" ہے۔

کوریائی خبر رساں ایجنسی نے کم اور پوتین کے درمیان ہونے والی ملاقات کے بارے میں کوئی تفصیلات نہیں بتائیں۔ صرف یہ بتایا کہ شمالی کوریا کے رہ نما آمد اور استقبال کے فوراً بعد اپنی منزل کی طرف روانہ ہو گئے۔

پریمورسکی ریجن کے گورنر اولیگ کویمیاکو کے مطابق، شمالی کوریا کے رہ نما نے اس اسٹاپ کے دوران ماحولیات اور قدرتی وسائل کے وزیر الیگزینڈر کوزلوف سے ملاقات کی۔

انہوں نے ٹیلی گرام پر لکھا کہ "اس سطح کا دورہ شمالی کوریا میں اپنے اتحادیوں کے ساتھ براہ راست رابطے کی ترقی کے بارے میں ایک اچھا پیغام ہے،" ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں