اسپین میں ٹی وی رپورٹر کے جسم کو چھونے کی نازیبا حرکت کرنے والا شخص گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسپین میں ایک خاتون فٹ بالرکو فٹ بال فیڈریشن کے صدر کی جانب سےبوسہ دینے کے اسکینڈل کے بعد جنسی ہراسانی کے ایک تازہ واقعے نے ملک بھر میں غم وغصے کی لہر دوڑا دی ہے۔

تازہ واقعے میں ایک خاتون رپورٹر کوایک شخص نے چھونے کی کوشش کی جس پر اسے گرفتار کرلیا گیا ہے۔

یہ واقعہ گذشتہ منگل کو پیش آیا جب کیوٹرو چینل کی رپورٹر عیسیٰ بالادو میڈرڈ میں ایک ڈکیتی کی کوریج کر رہی تھی۔

آن ایئر ہراساں

سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ملزم بالادو کے پیچھے آیا اور اس کے جسم پر ہاتھ رکھ کر اس سے اس ٹی وی چینل کے بارے میں پوچھا جس کے لیے وہ کام کرتی تھی۔

بالادو جو ابھی بھی آن ایئر تھی نے اس شخص کو ایک طرف دھکیلنے اور اپنی رپورٹ جاری رکھنے کی کوشش کی۔ دوسری طرف اسٹوڈیو میں موجود نیوزکاسٹرناچو آباد نے بالادو کو روک کر پوچھا کہ کیمرے میں دکھائی دینے والا یہ شخص کون ہے؟

صحافیہ کی طرف سے ملزم کو وہاں سے ہٹانے کی بار بار کی کوشش ناکام ہونے کے بعد کیمرہ مین نے کیمرہ اس شخص کی طرف موڑ دیا۔

ملزم نے اس کے جسم کو چھونے سے انکار کیا تاہم کہا کہ وہ وہاں سے جا رہا تھا لیکن اس کے بال اس کے ہاتھ میں پھنس گئے۔

اس شخص کو لائیو ٹیلی ویژن پر ایک خاتون رپورٹر کے ساتھ جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس نے X پلیٹ فارم پرویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں اس شخص کوخاتون رپورٹر کو ہراساں کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔

ہراسانی کا شکار ہونے والی رپورٹر کے ساتھ عوامی حلقوں کی طرف سے یکجہتی کا اظہار کیا جا رہا ہے جب کہ ٹی وی چینل کے مالک نے بھی اس کے ساتھ مکمل ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں