امریکا اور سعودی عرب کی مسلح افواج کی مشترکہ مشق ریڈ سینڈز 23.2 اختتام پذیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکا اور سعودی عرب کی مسلح افواج نے رواں ہفتے الریاض میں مشترکہ فوجی مشق میں حصہ لیا ہے۔اس موقع پر مشرقِ اوسط کے لیے امریکا کے اعلیٰ فوجی جرنیل موجود تھے۔

ریڈ سینڈز(سرخ ریت) 23.2 نامی مشق بغیر پائلٹ کے ایئرکرافٹ سسٹمز (یو اے ایس) کا مقابلہ کرنے کے لیے وضع کی گئی تھی۔ دونوں ملکوں کے درمیان اس نوعیت کی یہ دوسری مشترکہ فوجی مشق تھی۔

امریکا کی مرکزی کمان کے سربراہ جنرل ایرک کوریلا اور سعودی چیف آف جنرل اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل فیاض الرویلی نے اس مشق کا مشاہدہ کیا ہے۔ سعودی عرب میں امریکی سفیر مائیکل ریٹنی بھی اس موقع پر موجود تھے۔

اس سے قبل امریکی فوج کے مرکزی افسر برائے تعلقاتِ عامہ (سنٹرل پبلک افیئرز آفیسر) کرنل ارمانڈو ہرنانڈیز نے العربیہ کو بتایا تھا کہ اس مشق کو حقیقی دنیا کے حالات میں یو اے ایس کے توڑ کے لیے ٹیکنالوجیز کی جانچ کرنے کی غرض سے ڈیزائن کیا گیا تھا۔

مارچ میں دونوں ممالک کی مسلح افواج کے درمیان اس نوعیت کی پہلی مشق کی گئی تھی اور تب امریکی حکام نے کہا تھا کہ انھیں امید ہے کہ خطے کے دوسرے ممالک کی افواج کے ساتھ بھی اس مشق کا اعادہ کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں