سنگین بغاوت کے الزام میں سعودی وزارت دفاع کے دو اہلکاروں کو سزائے موت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں آج جمعرات کو وزارت دفاع نے غداری کے مرتکب دو اہلکاروں کی سزائے موت پر عمل درآمد کا اعلان کیا۔

سعودی پریس ایجنسی کی طرف سے شائع ہونے والے ایک بیان میں سامنے آیا ہے کہ ملزمان کو ملک سے بغاوت ، قانون کی حکم عدولی ،قومی اتحاد پامال کرنے اور انتشار پھیلانے کے اقدامات کے علاوہ، بطور فوجی اپنے حلف کو توڑنے کے حوالے سے قابل اطلاق ضوابط کے تحت، اسلامی قانون کی تعمیل میں شرعی احکامات کے مطابق سزائے موت دی گئی۔

فوجی، قومی اور سنگین غداری کے الزامات

تفصیلات کے مطابق، پائلٹ لیفٹیننٹ کرنل ماجد بن موسی عواد البلوی اور چیف سارجنٹ یوسف بن رضا حسن العزونی نے اپنی فوجی حیثیت میں کئی بڑے فوجی جرم کیے۔

انہیں 25 ذوالحجہ 1438 ہجری اور 24 ذی الحجہ 1438 ہجری کو گرفتار کیا گیا۔

پہلے ملزم کو تحقیقات کے بعد فوجی غداری کا ارتکاب کرنے ، قومی مفادات اور فوجی خدمات کے اعزاز کے تحفظ میں ناکامی کی سزا ملی۔

جب کہ دوسرے کو اعلی، قومی اور فوجی زمروں میں غداری کا مرتکب پایا گیا۔

فیصلے پر عمل درآمد

وزارت دفاع کے بیان کے مطابق ابتدائی فیصلے کے بعد انہیں عدالت میں اپیل کا حق دیا گیا۔

تاہم دونوں ملزموں کے اعتراف جرم اور تمام شواہد دیکھنے کے بعد قانونی تقاضوں کے مطابق ان کے خلاف فیصلے جاری کیے گئے۔

فیصلے کے نفاذ کے لیے ایک شاہی حکم جاری کیا گیا اور مذکورہ افراد کو آج جمعرات کو طائف میں سزائے موت دے دی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں