بکتر بند ٹرین،نجی جزیرہ، شمالی کورین لیڈرکے اور کیا عجیب مشاغل ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شمالی کوریا کے رہ نما کم جونگ اُن اپنے مہنگے اور عجیب و غریب مشاغل کے لیے جانے جاتے ہیں۔ جونگ کے نرالے شوقوں میں بکتر بند ٹرین، لگژری کاریں، مہنگے گھوڑوں پر سواری، اپنی ذاتی کشتی اور اپنا ایک نجی جزیرہ بھی شامل ہے۔ صرف یہی نہیں بلکہ دنیا کے اس منفرد لیڈر کی اس کے سوا بھی دلچسپیاں ہیں۔ انہیں سوئس پنیر اور باسکٹ بال کے مداح ہیں اور وہ عالمی طاقتوں کو للکارنے میں بھی شہرت رکھتے ہیں۔

کم جونگ ان کا پیانگ یانگ میں ایک دواخانہ کا دورہ (اے ایف پی سے محفوظ شدہ دستاویزات)

اپنے فارغ وقت میں وہ میزائل اورایٹمی آبدوزیں لانچ کرنےمیں گہری دلچسپی رکھتے ہیں۔ ایک متنازع اور متجسس حکمران کے بہت سے مفادات ہوتے ہیں۔ چونکہ وہ سوئس اسکولوں کے طالب علم تھے، اس لیے انہیں سوئس پنیر بہت پسند تھا۔ وہ اسےہمیشہ اپنی میز پر رکھتے ہیں۔ وہ اپنے وزن اور قد کے باوجود باسکٹ بال سے منسلک رہا۔

ان کے اسکول کے ساتھیوں کا کہنا ہے کہ وہ بے چین شخصیت کا تھا اور ہارنے سے نفرت کرتا تھا۔ اس نے پروپیگنڈے کے ایک حصے کے طور پر تصاویر کی زبان کا استعمال کیا۔ اسے اکثر گھوڑے پر سوار دیکھا جاتا۔

سنہ 2019ء میں انہیں مبینہ طور پر سفید گھوڑے پر شمالی کوریا کی بلند ترین چوٹی کو سر کرتے دیکھا گیا۔

بکتر بند ٹرین اور پرائیویٹ طیارے کے علاوہ کم جونگ اُن کے پاس مہنگی کاروں کا ایک بڑا ذخیرہ ہے۔ ان کے پاس 6 ملین ڈالر مالیت کی کشتی بھی ہے۔

کہا جاتا ہے کہ وہ اسے اپنے نجی جزیرے پر لے جاتے ہیں جہاں وہ اپنی چھٹیاں گزارتے ہیں۔ کم جونگ ان اپنی ذات پر بخل نہیں کرتے بلکہ خوب عیاشی کرتے ہیں۔

جاہ وحشمت بچپن سے ان کی زندگی کا خاصہ تھی اور اس نے حکمرانی کے کسی بھی مرحلے پر ان کا ساتھ نہیں چھوڑا۔

2014 میں، اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ میں یہ نتیجہ اخذ کیا گیا تھا کہ پیانگ یانگ حکومت نے 2012 میں لگژری اشیاء پر تقریباً 645 ملین ڈالر خرچ کیے تھے۔

حقیقت پسندانہ مشاغل کے علاوہ ان کے ملک کے میڈیا اور اپنے لوگوں کے عقائد کے مطابق کم مافوق الفطرت خصوصیات اور صلاحیتوں کے مالک ہیں۔ مثال کے طور پر کہا جاتا ہے کہ انہوں نے پہلی بار تین سال کی عمر میں کار چلائی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں