روس اور یوکرین

روس خوراک اور توانائی کے وسائل کو بہ طور ہتھیار استعمال کرتا ہے: زیلنسکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے ماسکو پر خوراک اور توانائی کو بہ طور ہتھیار استعمال کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ روس کو جوہری ہتھیار رکھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔

یوکرین کے صدر نے منگل کو نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں کہا کہ "روس خوراک کی قیمتوں اور جوہری توانائی کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرتا ہے۔"

انہوں نے مزید کہا کہ روس عالمی سطح پر خوراک کی قلت کے مسئلے کو حل کرنے کی کوشش کر رہا ہے تاکہ اس نے کئیف سے چھین لی گئی زمین کی بین الاقوامی شناخت حاصل کی جائے۔

سنہ2022ء میں روس کے یوکرین پر حملہ کرنے کے بعد جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاسوں میں اپنی پہلی براہ راست شرکت کے دوران زیلنسکی نے ماسکو کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ روس نے عالمی منڈی میں خوراک کی کمی کو ہتھیار بنانے کی کوشش کی تھی۔

انہوں نے روس پر یوکرینی بچوں کو اغوا کر کے نسل کشی کا الزام بھی لگایا اور کہا کہ کییف عالمی امن اجلاس کی تیاری کے لیے کام کر رہا ہے۔

زیلنسکی نے کہا کہ "یوکرین اپنی طاقت سے ہر ممکن کوشش کر رہا ہے تاکہ روسی جارحیت کے بعد دنیا میں کوئی بھی کسی ملک پر حملہ کرنے کی جرات نہ کرے۔ قابض ملک کو اپنی سرزمین پر واپس آنا چاہیے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں