ناقابل یقین منظر: خون خوار مگر مچھوں نے کتے کو بچانے میں کیسے مدد کی؟

ماہرین مگرمچھوں کے رویے کی وجہ معلوم کرنے میں ناکام، کیا کوئی شکاری جانور اپنے شکار کی مدد کرتا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مگر مچھ کا شمار خونخوار اور اپنے سے کمزور جانوروں پر حملہ کرنے والے شکاری جانور کہ فہرست میں ہوتا ہے مگر سوشل میڈیا پر ایک ایسا منظر بھی وائرل ہو رہا ہے جس میں دریا میں گرے کتے کو مگرمچھ بچانے میں اس کی مدد کر رہے ہیں۔

بہ ظاہر ایسے لگتا ہے کہ دریا میں گرا کتا تین مگرمچھوں کے گھیرے میں آنے کے بعد اب ایک منٹ بھی زندہ نہیں بچے گا مگر حیران کن طور پر مگرمچھ کتے کو کنارے کی طرف دھکیلتے دیکھ کر ہر کوئی حیران رہ گیا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ مگرمچھوں نے آوارہ کتے کو ہڑپ کرنے کے بجائے اس کی جان بچائی۔ یہ واقعہ بھارت کی مغربی ریاست مہاراشٹر میں پیش آیا جہاں ایک کتا دریا میں گر گیا۔

سائنس دانوں نے جرنل آف تھرٹینڈ ٹیکسا میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں لکھا کہ "یہ مگرمچھ اپنے منہ سے کتے کو چھو رہے تھے اور اسے آگے بڑھنے کے لیے دھکیل رہے تھے تاکہ وہ بحفاظت کنارے پر چڑھ سکے اور پھر آخر کار فرار ہو جائے۔ وہ کتے کو کھا سکتے تھے۔ پھر بھی مگرمچھوں میں سے کسی نے اس پر اس نے اس پر حملہ نہیں کیا اور اس کے بجائے اسے کنارے کی طرف دھکیلنے لگے۔

سائنسدانوں کو ابھی تک یقین نہیں ہے کہ مگرمچھوں نے ایسا کیوں کیا۔ حالانکہ ایک مگرمچھ کا وزن 1,000 پاؤنڈ تک ہو سکتا ہے اور وہ اپنا پیٹ بھرنے کے لیے کتے کو کھا سکتے تھے۔

مگرمچھ عام طور پر ہندوستان میں پائے جاتے ہیں اور بالغ نر 18 فٹ لمبائی تک پہنچ سکتے ہیں اور ان کا وزن 1,000 پاؤنڈ تک ہو سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں