دبئی میں ایوی ایشن پارٹس کے لیے خطےکے پہلے تھری ڈی پرنٹنگ پلانٹ کا افتتاح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پیراڈائم تھری ڈی نے دبئی میں اپنی جدید ترین تھری ڈی پرنٹنگ تنصیب کے دروازے کھول دیے ہیں۔اس فیکٹری کی کل لاگت 54لاکھ 40 ہزارڈالر (دوکروڑ درہم) بتائی گئی ہے۔یہ مشرق اوسط میں پہلا پلانٹ ہے جو ایرو اسپیس کے مخصوص ای اے ایس اے پارٹ 21 جی ریگولیشن کے مطابق پرزے تیار کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

نسدق میں درج کمپنی اسٹراٹیسیز لمیٹڈ کے صنعتی تھری ڈی پرنٹرز کے ساتھ مل کر یہ تنصیب ابتدائی طور پر خطے کی ہوا بازی کی صنعت کے لیے پرزوں کی تیاری پر توجہ مرکوز کرے گی۔

جبل علی انڈسٹریل ایریا میں واقع 10,750 مربع فٹ پر محیط فیکٹری میں ابتدائی طور پر ہر سال قریباً 2،000 پرزے تیار کرنےکی صلاحیت ہوگی۔توقع ہے کہ یہ پیداواری صلاحیت اگلی دہائی میں ہر سال بتدریج 20،000 تک بڑھ جائے گی۔ اس تنصیب میں تیار ہونے والے پرزوں میں طیاروں میں بیٹھنے کے اندرونی اجزاء، لیویٹری، الیکٹرانک کولنگ نالیاں، ماحولیاتی کنٹرول سسٹم ڈکٹنگ، وائر گائیڈز، فلٹر بکس، مائیکرو وینز، گیس کٹس، کمپوننٹ کنیکٹرز، ایئر انٹیک مینی فولڈز اور بہت کچھ شامل ہوں گے۔

افتتاحی تقریب میں اسٹراٹیسیز کے شریک بانی اسکاٹ کرمپ بھی شریک تھے۔ وہ عالمی سطح پر تھری ڈی پرنٹنگ کے گاڈ فادر کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ یہ ایک ایسی ٹیکنالوجی ہے جو دنیا بھر میں صنعتوں کو تبدیل کر رہی ہے۔ درحقیقت، یہ کرمپ کی اہم ایجاد ہے۔ ان کی ایجاد کردہ فیوزڈ ڈپوزیشن ماڈلنگ (ایف ڈی ایم) خود تھری ڈی پرنٹنگ کا مترادف بن گئی ہے۔

دنیا بھر میں بوئنگ، کولنز ایرو اسپیس، بی اے ای سسٹمز، ایئربس، ڈیہل ایوی ایشن، سیفران سیٹس سمیت معروف ہوائی جہاز اور کیبن انٹیریئر پروڈکٹ مینوفیکچررز اسٹریٹسیز کے تیار کردہ سسٹم استعمال کرتے ہیں۔ اسٹراٹیسیز ای ایم ای اے کے صدر اینڈریاس لینگ فیلڈ نے کہا کہ "پیراڈائم تھری ڈی کو جو چیز منفرد بناتی ہے وہ یہ ہے کہ یہ مشرقِ اوسط میں تھری ڈی پرنٹنگ کی خدمات مہیا کرنے والی واحد کمپنی ہے جس سے نجی اور تجارتی طیاروں کے لیے تھری ڈی پرنٹڈ پارٹس تیار کرنے کی تصدیق کی جائے گی‘‘۔

دبئی میں اس تنصیب کی موجودگی سے تبدیل کیے جانے والے پرزوں کی تیاری کا وقت ہفتوں، ممکنہ طور پر مہینوں تک کم ہوجائے گا، جس سے ایئرلائنز کو اپنے طیاروں کو زیادہ متوقع طور پر آپریشنل حالت میں رکھنے میں مدد ملے گی. اس سے نہ صرف آپریشنل اخراجات میں کمی آئے گی، بلکہ یہ ان فاضل پرزہ جات کی نقل و حمل سے منسلک ماحولیاتی اثرات کو بھی کم کرے گا۔

پیراڈائم تھری ڈی نے اسٹراٹیسیزکے دبئی میں طویل عرصے سے قائم پارٹنر ، ڈیزائن ٹو مینوفیکچرنگ کمپنی (ڈی 2 ایم سی او) اور لٹویا میں قائم تصدیق شدہ ایرو اسپیس پروڈکشن کمپنی ، اے ایم کرافٹ کے ساتھ شراکت داری کی ہے جس کے پاس ای اے ایس اے پروڈکشن آرگنائزیشن کی منظوری (پی او اے) ہے۔

نئی تنصیب میں صنعتی تھری ڈی پرنٹرز ڈی ٹو ایم سی او کی جانب سے نصب کیے گئے ہیں اور وہ پورے ہفتے میں 24 گھنٹے کام کریں گے اور خدمات مہیا کرنے کے ذمہ دار ہوں گے۔اے ایم کرافٹ پیراڈائم 3 ڈی کو اپنی سرٹیفکیشن کے تحت یورپی یونین سے باہر پہلی کوالیفائیڈ مینوفیکچرنگ سائٹ بننے کے قابل بنائے گا اور مقامی پیداوار کی منظوری حاصل کرنے میں پیراڈائم 3 ڈی کی معاونت کرے گا۔

اے ایم کرافٹ کے سی ای او جینس جٹنیکس نے کہا کہ ہم پیراڈائم تھری ڈی کی مدد کر رہے ہیں تاکہ وہ طیاروں کے تصدیق شدہ اجزاء کو ڈیزائن کرنے، مینوفیکچرنگ اور بعد از تیاری کے لیے ون اسٹاپ شاپ بن سکیں۔ یہ سرٹیفکیشن اور ٹیکنالوجی کے نقطہ نظر سے جدید ترین سہولت ہوگی۔

پیراڈائم تھری ڈی کے شریک بانی اور مالک محمد جمعہ نے کہا کہ جبل علی مینوفیکچرنگ پلانٹ کی متوقع کامیابی کے بعد ، پیراڈائم 3 ڈی اپنی توجہ کو دیگر صنعتی عمودی شعبوں میں بڑھانے کا ارادہ رکھتا ہے۔ہم اضافی پیداواری صلاحیت کو خطے میں مینوفیکچرنگ کے لیے بنیادی ترقی کی صلاحیت کے طور پر دیکھتے ہیں۔متحدہ عرب امارات کی جدت طرازی کی خواہش اور صنعتی تھری ڈی پرنٹنگ سے استفادہ کرنے والے منصوبوں کے لیے حکومت کی حمایت کا مطلب ہے کہ ملک حقیقی ڈیجیٹل مینوفیکچرنگ انقلاب کا مرکز بننے کے لیے مکمل طور پر تیار ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ہوا بازی کے انتہائی منظم شعبے میں ہماری صلاحیتوں کو ثابت کرنے سے تھری ڈی پرنٹنگ کے متعدد فوائد کی توثیق ہوگی۔ یہ ہمیں متوازی شعبوں جیسے تیل اور گیس اور دیگر صنعتی ایپلی کیشنز میں توسیع کے بھی قابل بنائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں