ایران کی پابندیوں کی فہرست میں چینی اداروں کی شمولیت کو مسترد کرتے ہیں: بیجنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

چین کی وزارت تجارت نے منگل کو کہا ہے کہ بیجنگ امریکا کی ایران سے متعلق پابندیوں کی فہرست میں چینی کمپنیوں اور افراد کو شامل کرنے کی سخت مخالفت کرتا ہے۔

وزارت تجارت نے ایک بیان میں مزید کہا کہ تہران کے ڈرون اور جنگی طیاروں کی تیاری کے سلسلے میں امریکا نے چینی اداروں کو پابندیوں کی فہرست میں شامل کیا ہے۔

امریکی محکمہ تجارت نے روس، جرمنی، چین اور دیگر ممالک کے 28 اداروں پر برآمدی پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

امریکی حکومت کے سرکاری فیڈرل رجسٹر میں شائع ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ بیورو آف انڈسٹری اینڈ سکیورٹ جو کہ امریکی محکمہ تجارت کے ڈھانچے کا حصہ ہے نے اطلاع دی ہے کہ یہ ادارے امریکی قومی سلامتی کے مفادات اور امریکا کی خارجہ پالیسی کےخلاف کام کرتے ہیں۔

چین کی متعدد دیگر درج کمپنیوں نے مبینہ طور پرامریکی نژاد سامان خریدا یا خریدنے کی کوشش کی جو بالآخر بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں اور ڈرونز بنانے کے لیے ایرانی پروگراموں کی حمایت کے لیے بھیجے گئے تھے۔"

پابندیوں کا شکار سپلائی کرنے والے پہلے خصوصی لائسنس حاصل کیے بغیرامریکی سامان کو امریکی محکمہ تجارت سے منظور شدہ قانونی اداروں کو نہیں بھیج سکیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں