سویڈش پولیس نے مسجد میں آتش زدگی کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سویڈن میں پولیس نے گذشتہ روز ملک کے وسطی علاقے میں واقع ایک مسجد میں آتش زدگی کے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہے اور کہا ہے کہ اس کی تحقیقات اس نکتے پر مرکوز ہے کہ آیا مسجد میں لگی آگ آتش زنی کا نتیجہ تھی یا نہیں۔

سویڈش پولیس نے منگل کو اپنی ویب سائٹ پر ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ عینی شاہدین سے پوچھ تاچھ کرے گی اور اس بات کی تصدیق کرے گی کہ آیا علاقے میں سکیورٹی کیمرے موجود تھے یا نہیں۔

پولیس کے ایک ترجمان نے فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ اسٹاک ہوم سے 150 کلومیٹر مغرب میں ایک لاکھ آٹھ ہزار افراد کی آبادی پرمشتمل قصبے ایسکلسٹونا میں واقع ایک مسجد میں پیر کی سہ پہر کے قریب آگ بھڑک اٹھی تھی۔اس کے نتیجے میں کوئی شخص زخمی نہیں ہوا۔اس واقعہ میں کوئی مشتبہ شخص ہے اور نہ ہی کوئی گرفتاری عمل میں آئی ہے۔

مسجد کے ترجمان انس دینیشے نے اے ایف پی کو بتایا کہ آتش زدگی کے نتیجے میں مسجد قریباً مکمل طور پر تباہ ہو چکی ہے اور کچھ بھی نہیں بچایا جا سکا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ مسجد گذشتہ ایک سال کے دوران میں تشدد کی متعدد کارروائیوں کا نشانہ بنی ہے اور ان کے اہل خانہ کوبھی دھمکیاں دی گئی ہیں۔

انھوں نے واقعہ سے متعلق کہا کہ (آگ کی وجہ کے بارے میں) ابھی کوئی نتیجہ اخذ کرنا قبل از وقت ہوگا ، ہمیں پولیس کو اپنا کام کرنے دینا چاہیے اور اس کی تحقیقات کا انتظار کرنا پڑے گا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ متعدد پہلووں سے واقعہ کی تحقیقات کر رہی ہے لیکن اس نے مزید تفصیل فراہم نہیں کی۔

واضح رہے کہ ایسکلسٹونا میں 15،000 سے 20،000 تک مسلمان آباد ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں