امریکا نےایران سے وابستہ ڈرون نیٹ ورک پر پابندیاں عاید کردیں، روس کی مدد کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے بدھ کے روز ایک نیٹ ورک پر پابندیاں عاید کی ہیں جس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ایران کے ڈرون پروگرام کے لیے حساس پرزوں کی خریداری میں مدد کر رہا تھا۔اس نے تہران پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ روس کو یوکرین پر حملوں کے لیے ڈرون مہیّا کر رہا ہے۔

محکمہ خزانہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نیٹ ورک نے ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب (آئی آر جی سی) کی جانب سے ایران کے شاہد-136 ڈرونز میں استعمال ہونے والے ایک اہم جزو کی خریداری میں شپمنٹ اور مالی لین دین کی سہولت مہیّا کی ہے۔

یہ ایران پر حالیہ پابندیوں کے سلسلے میں امریکا کا تازہ اقدام ہے۔ اس کارروائی میں ایران، چین، ترکیہ اور متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کے اداروں اور افراد کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

امریکی محکمہ خزانہ کے عہدے دار برائن نیلسن نے ایک بیان میں کہا کہ ایرانی ساختہ یو اے وی یوکرین میں روس کے حملوں میں ایک اہم ہتھیار ہیں، جن میں وہ حملے بھی شامل ہیں جو یوکرین کے شہریوں کو دہشت زدہ کرتے ہیں اور اس کے اہم بنیادی ڈھانچے کو نشانہ بناتے ہیں۔

محکمہ خارجہ نے ترکیہ اور چین سمیت متعدد ممالک سے تعلق رکھنے والے اداروں اور افراد پر اس نیٹ ورک کا حصہ ہونے کا الزام عاید کیا ہے۔

محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر کا کہنا ہے کہ امریکا روس کی جنگی مشینوں کی حمایت کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے پُرعزم ہے، خاص طور پرایسے ہتھیاروں کی ترسیل کو روکنا چاہتا ہے جو یوکرین کے عوام اوربنیادی شہری ڈھانچے کو نشانہ بناتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں