امریکا جھوٹ کی حقیقی سلطنت ہے: چین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

چین کی وزارتِ خارجہ نے امریکی محکمہ خارجہ کی ایک رپورٹ پرکڑی نکتہ چینی کی ہے اور اس کے ردعمل میں امریکا کو جھوٹ کی حقیقی سلطنت قراردیاہے۔اس رپورٹ میں بیجنگ پر معلومات میں ہیرا پھیری کی کوششوں میں سالانہ اربوں ڈالر خرچ کرنے کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ نے جمعرات کے روز اپنی اس رپورٹ میں کہا تھا کہ چین سنسرشپ، ڈیٹا جمع کرنے اور غیر ملکی خبررساں اداروں کی خفیہ خریداری کے ذریعے عالمی میڈیا میں ہیراپھیری کر رہا ہے۔

امریکی کانگریس کے مینڈیٹ کے تحت تیار کردہ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین کو اس مہم کے لیے بے مثال وسائل مختص کرنے کے باوجود جمہوری ممالک کو نشانہ بناتے ہوئے ’بڑے دھچکے‘ کا سامنا کرنا پڑاہے۔

چینی وزارتِ خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ رپورٹ میں حقائق کو نظرانداز کیا گیا ہے اور یہ خود غلط معلومات کا مجموعہ ہے۔اس نے کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ کی یہ رپورٹ تیار کرنے والی ایجنسیاں غلط معلومات کا منبع اور 'علمی جنگ' کی کمانڈ پوسٹ ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حقائق نے بار بار ثابت کیا ہے کہ امریکا 'جھوٹ کی حقیقی سلطنت' ہے۔

امریکا کی یہ رپورٹ ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب حالیہ برسوں میں چین کی جانب سے عالمی سطح پر حکومت کے کنٹرول میں میڈیا کے اثرو رسوخ کو بڑھانے کی کوششوں پر تنازع پیدا ہوا ہے۔ چین ان منفی تصویروں کا مقابلہ کرنے کی کوشش کررہا ہے جو اسے لگتا ہے کہ عالمی میڈیا کی طرف سے اس کا تشخص مجروح کرنے کے لیے پھیلائی جا رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں