سوڈان میں ہیضہ پھیلنے لگا، عالمی ادارہ صحت متحرک ہوگیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے اعلان کیا ہے کہ سوڈان میں ہیضے کی وبا تیزی سے پھیل رہی ہے۔ ادارہ نے متاثرہ علاقوں میں ریپڈ ریسپانس ٹیمیں تعینات کر دی ہیں۔ ادارہ سوڈانی وزارت صحت کی مدد کے لیے کام کر رہا ہے تاکہ مشتبہ کیسز کے نمونے صحت عامہ کی لیبارٹری میں منتقل کیے جا سکیں۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے اپنے بیان میں کہا کہ سوڈانی وزارت صحت، عالمی ادارہ صحت اور صحت کے شراکت داروں کے تعاون سے صاف پانی اور صفائی کی سہولیات کی فراہمی کو بڑھانے اور متاثرہ اور خطرے سے دوچار کمیونٹیز کو خطرات کے بارے میں آگاہی فراہم کرنے کی کوششوں کو مربوط کیا جارہا ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ سوڈان شدید بارشوں اور سیلاب کے علاوہ بڑے پیمانے پر نقل مکانی، بیماریوں کے پھیلاؤ اور غذائی قلت کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہے ۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق سوڈان میں 70 فیصد ہسپتال ریپڈ سپورٹ فورسز اور سوڈانیوں کے درمیان لڑائی کی وجہ سے معطل ہو چکے ہیں۔ جو ہسپتال اب بھی چل رہے ہیں وہ بھی بڑی تعداد میں بے گھر افراد کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں۔

ہیضہ اور ڈینگی

عالمی ادارہ صحت نے منگل کے روز اطلاع دی ہے کہ مشرقی سوڈان میں ہیضے اور ڈینگی بخار کے پھیلنے کی اطلاع ملی ہے جہاں ملکی فوج اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان خونریز لڑائی کے باعث ہزاروں افراد پناہ لیے ہوئے ہیں۔

تنظیم کے مطابق ہیضے کے 162 مشتبہ کیسز کو ریاست قصارف اور ایتھوپیا کے ساتھ سرحد کے ساتھ دوسرے علاقوں کے ہسپتالوں میں داخل کیا گیا ہے۔

10 افراد جاں بحق

انہوں نے بتایا کہ ہیضے کے 80 کیسز کی تصدیق ہو چکی ہے جبکہ 10 افراد ہیضے سے مر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں