شدید بارشوں سے نیویارک کی سڑکیں دریا بن گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شمال مشرقی امریکا میں جمعرات کی رات ہونے والی شدید بارشوں کے باعث نیویارک میں سڑکیں زیر آب آ گئیں اور سب وے اور ہوائی اڈے کی ٹریفک میں جزوی طور پر خلل پڑا، جب کہ حکام نے رہائشیوں سے انتہائی محتاط رہنے کی اپیل کی ہے۔

نیو یارک اسٹیٹ کی گورنر کیتھی ہوچول نے ایکس پلیٹ فارم کے ذریعے نیویارک اور لانگ آئی لینڈ، بڑے شہر کے مشرق میں اور ہڈسن ویلی میں "شدید بارش" کی وجہ سے "ایمرجنسی کی حالت" کا اعلان کیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی ’اے ایف پی‘، مقامی میڈیا اور سوشل میڈیا پر شائع ہونے والی تصاویر میں پانی سے بھری سڑکوں پر گاڑیوں کو دشواری کے ساتھ چلاتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ سڑکوں پر آنے والے پانی کے ریلوں کی وجہ سے گاڑیاں پھنسی دیکھی جاسکتی ہیں۔

بڑے شہر میں دیوہیکل سب وے سٹیشنز جزوی طور پر ڈوب گئے تھے۔ بروکلین میں کئی مرکزی لائنیں بند کر دی گئی تھیں۔ سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو چلانے والی کمپنی نے کہا کہ "ہم بروکلین اور مین ہٹن کے کئی سٹیشنوں میں سیلاب کی وجہ سے پیدا ہونے والے پانی کو ہٹانا جاری رکھے ہوئے ہیں"۔

نیویارک ریاست سے تعلق رکھنے والی ڈیموکریٹک کانگریس وومن، الیگزینڈریا اوکاسیو-کورٹیز نے اپنے حلقوں کو ایک ای میل میں کہا کہ مین ہٹن، کوئنز اور بروکلین کے محلوں میں 5 سے 12 سینٹی میٹر تک بارش ہو سکتی ہے۔ بارش کا سلسلہ جاری رہنے کی توقع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں