جنگ ہم پر مسلط کی گئی تھی اور ہم اسے ختم کرنے کے لیے پرعزم ہیں: البرھان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈانی خودمختاری کونسل کے سربراہ عبدالفتاح البرہان نے زور دے کر کہا ہے کہ امن کو کسی کی طرف سے رد نہیں کیا جا سکتا لیکن "یہ ایک ایسا امن ہونا چاہیے جو ملک کے وقار، فخر اور خودمختاری کو محفوظ رکھے"۔

عرب عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق جنرل البرہان نے سوڈان میں جاری جنگ کو ختم کرنے کے عزم کا اظہار کیا اور اس جنگ کو "ریاست کے جسم کو متاثر کرنےوالا کینسر" قرار دیا۔

خود مختاری کونسل نے البرہان جو سوڈانی فوج کے کمانڈر بھی ہیں کے حوالے سے کہا کہ ملک میں جاری یہ جنگ "ہم پر مسلط" کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک گروہ سوڈان کو "نگل" جانا چاہتا ہے۔ ان کا اشارہ متحارب سریع الحرکت فورسز کی طرف تھا۔

"ہمیں جیت کا یقین ہے"

البرہان نے کہا کہ "ہم اپنی مسلح افواج اور عوام کی مدد سے اس جنگ میں فتح پریقین رکھتے ہیں۔ یہ فوج وطن کی فوج ہے اور اس پر کوئی جماعت گروپ کی اجارہ داری نہیں"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "اس جنگ کے پیچھے دو بھائی ہیں جو اپنے اپنے مفادات کی پیروی کر رہے ہیں۔ وہ پروپیگنڈہ جس پر جنگ کی بنیاد رکھی گئی تھی، غلط اور گمراہ کن ہے۔ انہوں نے ریپڈ سپورٹ فورسز کے کمانڈر محمد حمدان دقلو (حمیدتی) اور ان کے بھائی عبدالحریم دقلو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ان کی وجہ سے اس وقت ملک بحران کا شکار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں