سعودی بجٹ 2024

سعودی میزانیہ 2024: 1.172 ٹریلین ریال آمدنی جبکہ 1.251 ٹریلین ریال اخراجات

2024 کے سعودی میزانیے کا حجم 1934ء میں مملکت کے پہلے بجٹ سے 89 ہزار گنا بتایا جاتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزارت خزانہ کی جانب سے 2024 کے ابتدائی بجٹ کا اعلان کیا گیا ہے جس کے مطابق 1.251 ٹریلین ریال کے اخراجات جبکہ 1.172 ٹریلین ریال آمدنی ہو گی۔ 79 ارب ریال کا خسارہ شامل ہے۔

مملکت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ کے مطابق سعودی عرب کے ابتدائی بجٹ کے بیان کے حوالے سے بتایا گیا گیا کہ ’یہ تاریخ کا سب سے بڑا بجٹ ہو گا جس میں ترقیاتی امور پر بھرپور توجہ دی گئی ہے اور بڑے منصوبوں کو مدنظر رکھا گیا ہے‘۔

بجٹ رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ ’ 2024 کا بجٹ تاریخ کا بہت بڑا بجٹ ہے۔ 2019 کا بجٹ 1.106 ٹریلین ریال کا تھا جبکہ 2020 کا 1.020 ٹریلین اور 2023 کا 1.114 ٹریلین ریال تھا‘۔

2024 کا جو بجٹ پیش کیا جا رہا ہے اس کے بارے میں کہا گیا یہ سال 1934 میں مملکت کے پہلے بجٹ سے 89 ہزار گنا ہے۔ مملکت کا پہلا بجٹ صرف 14 ملین ریال کا تھا۔

وزارت خزانہ نے توقع ظاہر کی کہ ’رواں برس 2023 کے بجٹ کی آمدنی تقریبا 1.18 ٹریلین ریال تک پہنچنے کی توقع ہے جبکہ اخراجات 1.262 ٹریلین ریال ہوں گے۔ اس حساب سے خسارہ 82 بلین ریال ہو گا جو ملکی پیداوار کا 2 فیصد ہے‘۔

ادھر وزیر خزانہ محمد عبداللہ الجدعان نے توقع ظاہر کی کہ ’2024 کے لیے مجموعی آمدنی تقریبا 1.172 بلین ریال تک پہنچ جائے گی۔ اس اعتبار سے توقع ہے کہ 2026 میں آمدنی 1.259 بلین ریال تک پہنچ جائے۔

اخراجات کے بارے میں تخمینہ ہے کہ وہ 2024 تک 1.251 بلین ریال ہوں گے۔

انہوں نے اس حوالے سے مزید کہا ’ معاشی اصلاحات کا عمل جاری رہے گا۔ مارکیٹ کی صورتحال دیکھتے ہوئے بہتری کی جانب گامزن رہیں گے‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں