سعودی عرب ٹیکنالوجی سے متعلق پاکستانی کمپنیاں رجسٹر کرنے والا پہلا ملک بن گیا

دونوں ملکوں کے درمیان مفاہمتی یادداشت پر دستخط، رجسٹریشن میں معاونت کے لیے سعودی عرب میں خصوصی ڈیسک قائم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پاکستان کے وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی نے سعودی عرب کو پاکستان کی ٹیکنالوجی سے متعلق کمپنیوں کو رجسٹر کرنے کے حوالے سے پیش رفت کرنے والا پہلا ملک قرار دیا ہے۔ وزیر آئی ٹی عمر سیف کے مطابق یہ پاکستان کمپنیوں کا اولین مطالبہ تھا۔ جسے سعودی عرب نے خصوصی ڈیسک قائم کر کے پورا کر دیا ہے۔ ان کےمطابق یہ اک بڑی پیش رفت ہے ۔

واضح رہے دو کمپنیوں نے پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان آئی ٹی کے شعبے میں تعاون کو فروغ دینے کے لے ایک مفاہمتی یادداشت پر بھی دستخط کیے ہیں۔ جبکہ سعودی عرب نے بھی پاکستان کے لیے ایک خصوصی ڈیسک کے قائم کرنے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔ اس امر کا اظہار پاکستان کے نگران وزیر برائے آئی ٹی کی موجودگی میں کیا گیا ہے۔

یہ پیش رفت دونوں ملکوں کے درمیان مفاہمت یادداشت پر دستخطوں کے موقع پر سامنے آئی ہے۔ ریاض میں پاکستان کے سفارت خانے کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے۔ یہ دو طرفہ پیش رفت ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن ، ڈیجیٹل انفراسٹرکچر کے فروغ اور ٹیکنالوجی کے میدان میں تعاون بڑھانے کے لیے ہے۔

یاد رہے سعودی عرب کی طرف سے اس یادداشت پر وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی عبداللہ السواہا نے دستخط کیے ہں۔ سعودی وزیر کا اس موقع پر کہنا تھا دونوں ملکوں کے درمیان چھوٹے اور درمیانے سائز کی صنعت کے فروغ کی حوصلہ افزائی ہوگی اور سٹارٹ اپس کے رجحان میں ترقی ہو گی۔

سعودی وزیر نےمزید کہا ' منصوبہ یہ ہے کہ مشترکہ تعاون کوکاروبار میں متشکل کریں اور اطلاعات کے تبادلے کو تیز کریں۔ آئی ٹی کے میدان میں نئے کاروباروں کے فروغ کے لیے انکیو بیٹرز کے تصور کو آگے بڑھائیں۔

پاکستان کے نگران وزیر آئی ٹی نے اپنے ریاض میں قیام کے دوران مختلف اعلی شخصیات اور حکام کے ساتھ ملاقاتیں کی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان چاہتا ہے کہ دوطرفہ طور پر مواقع بڑھیں اور ہمارے سٹارٹ اپس کے لے سعودی عرب سے سرمایہ کاری میں اضافہ ہو۔ عمر سیف کے مطابق پاکستان کے ان سٹارٹ اپس کے لے پچھلے دو برسوں کے دوران سرمایہ کاری آٹھ سو ملین ڈالر تک پہنچ چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں