حجاب پر ایرانی سکیورٹی ایجنٹوں سے جھڑپ میں زخمی دوشیزہ کی والدہ گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

کرد شناخت رکھنے والے’’ہینگا‘‘ نامی انسانی حقوق کی انجمن نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ’ایکس‘(سابقہ ٹوئٹر) پر دعویٰ کیا ہے کہ گذشتہ روز میڑو سے ایرانی سکیورٹی فورسز کے ہاتھوں گرفتاری کے دوران زخمی ہونے والی جس لڑکی ارمیتا گارواند کو کومہ میں جانے کے بعد ہسپتال پہنچا دیا تھا، آج اس کی والدہ شاھین الاحمدی کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

تاہم ابھی تک گرفتاری کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں ہو سکی۔

انسانی حقوق کے دو ممتاز رضاکاروں نے رائٹرز کو بتایا کہ ایران میں حجاب کی پابندی سے متعلق قانون کی خلاف ورزی پر تہران میٹرو میں ایجنٹس کے ساتھ تصادم میں گارواند نامی دوشیزہ زخمی ہوئی جن کا کوما میں چلے جانے پرانتہائی تشویشناک حالت میں ہسپتال مین علاج جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں