دھمکی اورلالچ کے بعد بذریعہ کارٹون بھی چین کا تائیوان کو اپنا حصہ ظاہر کرنے کی کوشش

حقائق تصدیق ٹرینڈنگ
پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اپنے اختیار میں ہر طرح سے بیجنگ تائیوان کو چین میں ضم کرنے اور چینی سرزمین کا حصہ ظاہر کرنے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے جدوجہد کر رہا ہے۔ چاہے سیاست کے ذریعے ہو یا فوجی دھمکیوں کے ذریعے یا اس کے گردونواح میں مسلسل تربیت کے ذریعے چین ہر صورت تائیوان پر اپنا حق جتاتا ہے۔ اس حوالے سے اس نے اب بچوں کے لیے کارٹون فلموں کا سہارا لینا بھی شروع کردیا ہے۔

بظاہر نئی نسل کے ذہنوں میں "ون چائنہ" کلچر کو پیوست کرنے کے اقدام میں چینی فوج نے چند روز قبل ایک اینیمیشن شائع کی تھی جس میں آبنائے تائیوان کے پار ملک کے دوبارہ اتحاد کے سفر کو دکھایا گیا تھا۔ یہ کارٹون بیجنگ کے طویل مدتی ہدف کا پردہ فاش کر رہے ہیں اور یہ ہدف تائیوان جزیرے کو خود میں ضم کرنا ہے۔

اینی میشن کو پیپلز لبریشن آرمی کی ایسٹرن تھیٹر کمانڈ نے عوامی جمہوریہ چین کے یوم تاسیس کے موقع پر جاری کیا۔ یہ ملک کے سمندر پار تاریخی خزانوں کے بارے میں قوم پرستانہ جذبات کو ابھارنے کے لیے نئی مختصر فلم ہے۔

اس کارٹون میں دو کرداروں کو دکھایا گیا ہے جو آرٹ ورک "اے ڈویلنگ ان دی فوشن ماؤنٹینز" سے متاثر ہوئے ہیں۔ یہ کردار سونگ ڈائنسٹی سے تعلق رکھنے والے آرٹسٹ ہوانگ گونگوانگ کے تھے۔

یہ پینٹنگ چودھویں صدی میں بنائی گئی تھی لیکن 1650 میں آگ لگنے سے اسے نقصان پہنچا اور اسے دو حصوں میں تقسیم کر دیا گیا۔ ایک حصہ اب تائی پے کے نیشنل پیلس میوزیم میں محفوظ ہے اور دوسرا چینی شہر زی جیانگ کے صوبائی میوزیم ہانگجو میں محفوظ ہے۔ پینٹنگ یا مخطوطے کو طویل عرصے سے دونوں اطراف کے درمیان تقسیم کی زندہ علامت کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔

اینیمیشن میں ایک بونا بھی دکھایا گیا ہے جو تائی پے میں پینٹنگ کے ایک ٹکڑے کی نمائندگی کرتا ہے۔ اس نے ہانگجو میں اپنے ہم منصب سے ملنے کا فیصلہ کیا اور وہ یاد کرتا ہے کہ جب وہ 12 سال پہلے اس سے ملنے آیا تھا۔ اس میں اشارہ تھا کہ 2011 میں اس آرٹ ورک کی مشترکہ نمائش کے بدلے چین نے تائیوان کو نصف پینٹنگ قرض میں دی تھی۔ اس دوران چین اور تائیوان کے درمیان گرم جوش تعلقات تھے۔

بونے کے ہانگجو کے سفر پر اس نے چینی فوجی طیاروں اور بحری جہازوں کو پاس نمائش میں موجود بہت سے گیجٹس کو دیکھ کر حیرانی کا مظاہرہ کیا۔

ژی جیانگ کے صوبائی میوزیم میں اس کی ملاقات دوسرے بونے سے ہوئی اور دونوں نے اس سال ہانگجو میں منعقد ہونے والے ایشین گیمز کا دورہ کیا۔ ٹیم تائیوان کو دیکھنے کے لیے بروقت پہنچیں جسے افتتاحی تقریب کے دوران "چائنیز تائپے" کے نام سے متعارف کرایا گیا تھا۔

یاد رہے چین کی حکمران کمیونسٹ پارٹی کا دعویٰ ہے کہ 24 ملین افراد کی آبادی والا تائیوان اس کا علاقہ ہے۔ تاہم اس نے اس پر کبھی کنٹرول حاصل نہیں کیا۔ چینی حکمران پارٹی طویل عرصے سے تائیوان کو چین کے ساتھ "دوبارہ متحد" کرنے کا وعدہ کرتی آرہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں