برازیل: اندھا دھند فائرنگ میں 3 ڈاکٹر قتل، دل دہلا دینے والی ویڈیو وائرل

ریو ڈی جنیرو میں حملہ آوروں نے 30 سیکنڈ میں 33 گولیاں برسا دیں، تینوں ڈاکٹر طبی کانفرنس میں شرکت کے لیے آئے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برازیل کے شہر ریو ڈی جنیرو میں اندھا دھند فائرنگ کرکے تین ڈاکٹروں کو موت کی نیند سُلا دیا گیا۔ دل دہل دینے والے واقعہ کی ویڈیو وائرل ہوگئی اور اسے بڑی تعداد میں سوشل میڈیا پر پھیلا دیا گیا ہے۔ خوفناک ویڈیو کلپ میں دیکھا جا سکتا ہے کہ تین بندوق بردار ریو ڈی جنیرو کے ایک ہوٹل کے کلب میں داخل ہوئے اور وہاں موجود لوگوں کو گولیاں مارنا شروع کردیں۔

وحشیانہ حملے کی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ گاڑی سے اترنے والے تین حملہ آوروں نے جمعرات کو تین ڈاکٹروں کو گولی مار دی۔ صرف 30 سیکنڈ میں 33 گولیاں چلائی گئیں۔ حملہ آوروں میں سے ایک کو مزید ہتھیار لینے کے لیے گاڑی کی طرف واپس آتے ہوئے بھی دیکھا گیا۔ فرار کی کوشش کرنے والے ایک ڈاکٹر کو بھی بے دردی سے گولی مار دی گئی۔

ڈاکٹر پرسیو ریبیرو منگل کے روز ہی 33 سال کے ہوئے تھے۔ ڈاکٹر مارکوس ڈی اینڈریڈ کی عمر 62 سال ہے۔ یہ دونوں موقع پر ہی چل بسے۔ 35 سالہ ڈاکٹر ڈیاگو بومفیم نے ہسپتال پہنچ کر دم توڑا۔ 32 سالہ 32 سالہ ڈاکٹر ڈینیئل سونینڈ کو تین گولیاں ماری گئیں اور وہ زخمی ہوگئے۔

یہ تینوں سرجن پاؤں اور ٹخنوں کی سرجری کی چھٹی بین الاقوامی کانگریس میں شرکت کے لیے ریو ڈی جنیرو آئے تھے۔

حملہ آوروں نے 12 بج کر 59 منٹ پر پہنچنے سے کچھ دیر قبل ایک گروپ فوٹو کھینچا اور اسے سوشل میڈیا پر شیئر کیا۔

عینی شاہدین نے پولیس تفتیش کاروں کو بتایا کہ حملہ آوروں نے کچھ نہیں کہا اور تقریباً 20 گولیاں چلائیں۔ برازیل کی خبر رساں ایجنسی "جی ون" کی رپورٹ کے مطابق ایک عینی شاہد کے مطابق سب کچھ صرف 30 سیکنڈ میں ہوگیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں