چینی فرم نے روس کے واگنر کو انٹیلی جنس کے لیے مصنوعی سیارہ فروخت کیا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روسی گروپ واگنر نے انٹیلی جنس کے کام میں مدد کے لیے نومبر 2022 میں دو سیٹلائٹ حاصل کرنے اور ان کی تصاویر استعمال کرنے کے لیے ایک چینی فرم کے ساتھ معاہدے پر دستخط کیے جب اس تنظیم نے یوکرین پر روس کے حملے کو آگے بڑھانے کی کوشش کی۔

5 اکتوبر 2023 کو لی گئی ایک تصویر میں 15 نومبر 2022 کو بیجنگ یونز ٹیکنالوجی کمپنی لمیٹڈ اور نیکا فروٹ، جو کہ اس وقت پریگوزن کی تجارتی سلطنت کا حصہ تھی، کے درمیان دو ہائی ریزولوشن چینی خلائی کمپنی چانگ گوانگ سیٹلائٹ ٹیکنالوجی (سی جی ایس ٹی) سے تعلق رکھنے والے مشاہداتی سیٹلائٹس کے حصول کے لیے دستخط کیے گئے ایک معاہدے کی تفصیل دکھاتی ہے۔  (اے ایف پی)
5 اکتوبر 2023 کو لی گئی ایک تصویر میں 15 نومبر 2022 کو بیجنگ یونز ٹیکنالوجی کمپنی لمیٹڈ اور نیکا فروٹ، جو کہ اس وقت پریگوزن کی تجارتی سلطنت کا حصہ تھی، کے درمیان دو ہائی ریزولوشن چینی خلائی کمپنی چانگ گوانگ سیٹلائٹ ٹیکنالوجی (سی جی ایس ٹی) سے تعلق رکھنے والے مشاہداتی سیٹلائٹس کے حصول کے لیے دستخط کیے گئے ایک معاہدے کی تفصیل دکھاتی ہے۔ (اے ایف پی)
Advertisement

معاہدے سے متعلق دستاویز ملاحظہ کرنے والے یورپی سکیورٹی ذرائع نے اے ایف پی کو بتایا کہ سیٹلائٹ تصاویر کو افریقہ میں واگنر کی کارروائیوں اور جون میں اس کی ناکام بغاوت میں مدد کے لیے بھی استعمال کیا گیا تھا جو اس گروپ کے بانی یوگینی پریگوژن کی موت کے بعد اب اس کے ڈی فیکٹو ٹوٹنے کی وجہ بنی

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں