سرکوزی پر دھوکہ دہی کے ہتھکنڈے استعمال کرنے کا الزام عائد کردیا گیا

فیصلہ سابق فرانسیسی صدر کے لیے ممکنہ نئے مقدمے کی راہ بھی کھول دے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس کے سابق صدر نکولس سرکوزی پر کو جھوٹی گواہی کے لیے اکسانے اور ایک مجرمانہ گروہ کی تشکیل کا الزام عائد کردیا گیا ہے۔ اس سے وہ ایک دھوکہ دہی کی تیاری کر رہے تھے جس کا مقصد انھیں 2007 میں اپنے صدارتی انتخابات کی مہم کے لیے لیبیا کی مالی معاونت کے شبہات سے بری کرنا تھا۔

یہ فیصلہ 2007 سے لکر 2012 تک سربراہ مملکت رہنے والے سرکوزی کے خلاف ممکنہ نئے مقدمے کی راہ کھول رہا ہے۔ سرکوزی فرانسیسی دائیں بازو کی اہم شخصیت ہیں۔

یہ فیصلہ تقریباً 30 گھنٹے کی تفتیش کے بعد کیا گیا جس کی سربراہی اس عدالتی تحقیقات کے ذمہ دار دو مالیاتی ججوں نے کی۔ اس حوالے سے کارروائی مئی 2021 میں شروع ہوئی۔ اس میں مدعا علیہان میں سے ایک نے "سرکوزی کا بچاؤ" کہا تھا۔

وکلا ژاں مشیل ڈاروئس اور کرسٹوف انگرین نے ایک بیان میں کہا کہ نکولس سرکوزی اپنے حقوق کے حصول، سچائی کو ظاہر کرنے اور اپنے اعزاز کا دفاع کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔

اس فرد جرم کے ذریعے ججوں کا خیال ہے کہ ان کے پاس کم از کم نو دیگر فریقوں کی جانب سے مختلف درجوں تک، ممکنہ طور پر سرکوزی کی رضامندی دینے کے ذریعے کی گئی دھوکہ دہی میں شرکت کے بارے میں کافی سنجیدہ ثبوت موجود ہیں۔

سرکوزی جمعہ کو پیرس کی عدالتی عدالت میں پیش ہوئے۔ انہوں نے مسلسل کسی بھی خلاف ورزی کے ارتکاب سے انکار کیا ہے۔ ان پر 2025 میں لیبیا کے فنڈز کو غیر قانونی طور پر قبول کرنے کے الزام میں مقدمہ چلنا ہے۔

سابق صدر کو اس کیس میں جرم ثابت ہونے پر 10 سال قید کی سزا ہو سکتی ہے اور وہ دیگر قانونی مقدمات میں بھی ملزم ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں