فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل کی غزہ کے باشندوں کو مصر نقل مکانی کی تجویز پر قاہرہ کا ناراضی کا اظہار

اعلیٰ سطحی مصری سکیورٹی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ اسرائیلی قابض ریاست کے اہداف کو پورا کرنے کا واضح منصوبہ ہے جس کا مقصد فلسطینی علاقوں کو ان کے باشندوں سے خالی کرانا ہے۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

اسرائیلی عسکری لیڈرشپ کی طرف سے غزہ کے فلسطینیوں کو نقل مکانی کر کے مصر جانے کا مشورہ دینے کے بعد قاہرہ نے اس تجویز کو مسترد کردیا ہے۔ مصری حکومت کے اعلیٰ سطحی ذرائع نے کہا ہے کہ فلسطینیوں کو ان کے ملک سے نکالنے اور مصرمیں آباد کرنے کی تجویز ایک سوچی سمجھی اسکیم ہے جس کا مقصد فلسطینی اراضی کو فلسطینیوں سے خالی کرانا اور قضیہ فلسطین کو ختم کرنا ہے۔

مصر کے اعلیٰ سکیورٹی ذرائع نے کہا ہےکہ فلسطینیوں کو ختم کرنے پر مبنی اسرائیلی قابض ریاست کے مقاصد کو پورا کرنے کا واضح منصوبہ ہے اور اس منصوبے کے تحت فلسطینیوں کو ان کے علاقے سے بے دخل کرنا ہے۔

ذرائع نے منگل کے روز مصری میڈیا کو بتایا کہ مسئلہ فلسطین اب اپنی تاریخ کے سب سے خطرناک موڑسے گذر رہا ہے کیونکہ یہ واضح ہو گیا ہے کہ مقبوضہ فلسطینی علاقوں کو زمین کے مالکان اور مکینوں سے خالی کرانے کا واضح منصوبہ ہے۔انہیں اسرائیلی بمباری میں موت یا اپنی زمینوں سے باہر نقل مکانی کے درمیان انتخاب دے کر انہیں علاقے سے نکلنے پرمجبور کیا جا رہا ہے۔

"آباد کاری کے منصوبے "

ذرائع نے مسئلہ فلسطین اور فلسطینیوں کے حق پر موجودہ بحران کے مستقل اثرات سے خبردار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ کچھ ایسی قوتیں سرگرم ہیں جو قابض ریاست کے منصوبے کو عملی جامہ پہناتی ہیں اور اسے تاریخی اور سیاسی طور پر گمراہ کن تجاویز پیش کرنے کا جواز فراہم کرتی ہیں۔ ان تجاویز میں فلسطینیوں کو جزیرہ نما سینا میں آباد کرنے اور فلسطینی اراضی کو خالی کرنے پر مبنی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ مصر نے اس معاملے کا سامنا کیا ہے اور اس کا سامنا کرے گا۔ اس سے قبل اسے فلسطینی عوامی اتفاق رائے سے مسترد کر دیا گیا تھا جو اس کے حق اور سرزمین پر قائم ہے۔ اس کا اعلان عرب لیگ کے فیصلوں کے ذریعے مختلف حوالوں سے کیا گیا تھا۔

مصری ردعمل غیر ملکی میڈیا کے لیے اسرائیل کے چیف ملٹری ترجمان لیفٹیننٹ کرنل رچرڈ ہیچٹ کے اس بیان کے چند گھنٹے بعد سامنے آیا ہے، جس میں انھوں نے غزہ پر حملوں سے فرار ہونے والے فلسطینیوں کو مصر جانے کا مشورہ دیا تھا۔

غزہ کے الرمل محلے میں ہونے والی تباہی سے
غزہ کے الرمل محلے میں ہونے والی تباہی سے

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ غزہ اور مصر کے درمیان سرحدی گزرگاہ فی الحال بند ہے، حالانکہ یہ کل تک کھلی تھی۔

قضیہ فلسطین کے بنیادی تقاضے

کل شام اعلیٰ سطحی مصری ذرائع نے تصدیق کی کہ غزہ کی پٹی سے نقل مکانی اور اس کی آبادی کی پٹی کو خالی کرنے کے مطالبات فلسطینی کاز کو ختم کرنے کے لیے کافی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مصر کو غزہ کےعوام کے لیے راہ داریاں کھولنے پرمجبور کرنے کے بجائے اسرائیل کو یہ ذمہ داری پوری کرنی چاہیے۔

بین الاقوامی اور عرب حکام کے ساتھ اپنی مشاورت کے دوران مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے اتفاق رائے کی اہمیت اور فلسطینی علاقوں میں کشیدگی کو روکنے کے لیے موثر کوششوں پر زور دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ غزہ میں جاری بحران کے انسانی حالات اور پورے خطے کی سلامتی اور استحکام پر سنگین اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ مسئلہ فلسطین کے دو ریاستی حل پر ایک جامع اور منصفانہ حل کی راہ کی بنیاد رکھنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دو ریاستی حل ہی خطے کی سلامتی اور استحکام کا ضامن ہوسکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں