غزہ داخلے پر مجبور، طویل جنگ کی تیاری کر رہے ہیں: نیتن یاھو کی بائیڈن سے گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی گرپوں اور اسرائیل کے درمیان مسلسل محاذ آرائی کی روشنی میں اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے امریکی صدر بائیڈن کو مطلع کیا ہے کہ اسرائیلی افواج غزہ کی پٹی میں داخل ہونے پر مجبور ہیں۔ نیتن یاہو نے بائیڈن کے ساتھ فون کال پر گفتگو میں کہا ان کے پاس زبردستی جواب دینے کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے۔

ایک اسرائیلی ویب سائٹ کے مطابق نیتن یاھو نے کہا کہ اسرائیل ایک طویل اور بے مثال جنگ کی تیاری کر رہا ہے۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ وہ یرغمالیوں کے حوالے سے حماس کے ساتھ مذاکرات کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے۔

واضح رہے غزہ کی پٹی پر کنٹرول رکھنے والی تحریک حماس نے ہفتے کی صبح اسرائیل پر اچانک حملہ کردیا۔ اس حملہ میں زمینی، سمندری اور فضا سے راکٹ داغے گئے اور فلسطینیوں نے اسرائیل میں داخل ہوکر کارروائیاں شروع کردی تھیں۔ اسرائیل نے غزہ کی پٹی پر فضائی حملوں اور توپ خانے کی گولہ باری سے جواب دیا۔

اقوام متحدہ کے مطابق اس جنگ کے تین روز کے دوران غزہ میں ایک لاکھ 23 ہزار افراد بے گھر ہوگئے ہیں۔ اس حوالے سے امریکی صدر بائیڈن نے اسرائیل کے لیے اضافی مدد فرام کرنے کا حکم دیا۔ امریکہ کا طیارہ بردار بحری جہاز بھی اسرائیل کی طرف روانہ کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں