اسرائیلی یرغمالیوں کی مصر کے راستے واپسی کا معاملہ بہت ’پیچیدہ‘ ہے:امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن نے کہا ہے کہ غزہ میں حماس کی جانب سے یرغمال بنائے گئے اسرائیلیوں کی مصر کےراستے واپسی ایک پیچیدہ معاملہ ہے۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار تل ابیب کے یکجہتی دورے کے موقعے پر کیا۔ انہوں نے کہا کہ درجنوں امریکیوں سمیت غیر ملکی "قیدیوں" کو منتقل کرنے کے لیے غزہ کی پٹی سے مصر تک ایک محفوظ راستہ کھولنے کی بات کی جا رہی ہے مگر یہ ایک پیچیدہ معاملہ ہے۔

انہوں نے جمعرات کو پریس بیان میں تصدیق کی کہ غزہ سے مصر تک اس راہداری کو کھولنے کی تفصیلات یقیناً پیچیدہ ہیں۔

حماس کا موقف

دوسری طرف حماس کے سیاسی بیورو کے سربراہ کے مشیر طاہر النونو نے جنگ کے دوران اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی کو ناقابل فہم قرار دیا۔

غزہ اور مصر کے درمیان رفح کراسنگ
غزہ اور مصر کے درمیان رفح کراسنگ

انہوں نے عرب ورلڈ نیوز ایجنسی کو بتایا کہ "ہم اب ایک جنگ لڑ رہے ہیں، جب یہ ختم ہو جائے گی تو ہم تمام مسائل اور ان کی تفصیلات اور حماس کے اصولی مطالبات کے بارے میں بات کریں گے۔ ابھی تک اس حوالے سے کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔

غزہ کو خالی کرنے کا منصوبہ

حماس رہ نما نے کہا کہ غزہ میں بے گھر ہونے والوں کے لیے محفوظ راستہ کھولنے کی بات کرنا یہاں کے لوگوں کو اپنے ملک سے نکال باہر کرنے کی کوشش ہے۔

غزہ پر اسرائیلی بمباری
غزہ پر اسرائیلی بمباری

انہوں نے مزید کہا کہ "حماس کو فلسطینی عوام کی استقامت پر بھروسہ ہے اور ہمیں یقین ہے کہ وہ ہجرت اور زمین چھوڑنے کے تجربے کو دوبارہ قبول نہیں کریں گے۔"

لبنانی حزب اللہ کے جنگ میں حصہ لینے کے امکان کے بارے میں انہوں نے زور دے کر کہا کہ ان کی جماعت لبنان کی شرکت کا خیرمقدم کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ "ہم قابض ریاست کے ساتھ محاذ آرائی میں کسی بھی فریق کی شرکت کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں