یقین ہے امداد غزہ پہنچ جائے گی، فلسطینی شہری حماس کی خاطر اپنا نقصان نہ کریں: بلینکن

یو این ، مصر اور اسرائیل سے مل کر امداد پہنچانے کا طریقہ کار طے کر رہے: امریکی وزیر خارجہ کا ’’ العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو انٹرویو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلینکن نے ’’العربیہ‘‘ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ فلسطینی شہریوں کو حماس کے اقدامات کی وجہ سے نقصان نہیں اٹھانا چاہیے۔ انہوں نے کہا ہم شراکت داروں کے ساتھ مل کر اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں کہ امداد غزہ کی پٹی تک پہنچ جائے۔

قبل ازیں بلنکن نے قاہرہ میں کہا تھا کہ انہوں نے خطے میں اپنے دورے کے دوران جن عرب ملکوں کا دورہ کیا وہ اسرائیل کے ساتھ تنازع کا دائرہ وسیع نہ کرنے کے پابند ہیں۔

انہوں نے قاہرہ سے اسرائیل جانے سے قبل کہا کہ ’کسی کو بھی آگ میں ایندھن نہیں ڈالنا چاہیے۔ لبنان اور اسرائیل کی سرحد پر باہمی بمباری نے خدشہ پیدا کیا کہ حماس اور اسرائیل کے درمیان جنگ علاقائی تنازع میں بدل جائے گی۔

بلنکن نے نامہ نگاروں سے مزید کہا کہ میں نے تقریباً تمام شراکت داروں سے جو سنا ہے وہ یہ ہے کہ ایک عزم اور ایک مشترکہ نقطہ نظر موجود ہے کہ ہمیں ہر ممکن کوشش کرنی چاہیے کہ یہ تصادم مقامات تک تک نہ پھیلے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جن ملکوں کا میں نے دورہ کیا وہ ملک اس حوالے سے اپنے ذرائع استعمال کر رہے ہیں کہ یقینی بنایا جا سکے کہ ایسا نہ ہو۔

ایک اور سیاق و سباق میں بلنکن نے کہ کہ ہمیں یقین ہے کہ انسانی امداد مصر سے غزہ تک پہنچ جائے گی۔ قاھرہ نے امریکی شہریوں کو رفح کراسنگ کے ذریعے غزہ کی پٹی سے نکلنے کی اجازت دینے کے لیے انسانی امداد غزہ بھیجنے کی شرط عائد کی ہے۔ بلینکن نے مزید کہا کہ رفح کراسنگ کو کھول دیا جائے گا جو غزہ کی پٹی اور بیرونی دنیا کے درمیان واحد راہداری ہے اور اس پر اسرائیل کا کنٹرول نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ ہم اقوام متحدہ، مصر اور اسرائیل کے ساتھ مل کر ضرورت مند لوگوں تک امداد پہنچانے کے لیے ایک طریقہ کار تیار کر رہے ہیں۔۔ واضح رہے مصر کے صحرائے سینا میں ابتدائی امدادی قافلے کراسنگ کے کھلنے کا انتظار کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں