اسرائیل غزہ میں عام شہریوں کو مارنے سے گریز کرے: 81 فیصد امریکیوں کی رائے

امریکہ میں کئے گئے سروے میں 19 فیصد افراد نے عام شہریوں کو مارنے کی حمایت کی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ میں رائٹرز کی جانب سے کرائے گئے ایک سروے سے پتہ چلتا ہے کہ امریکیوں کی اکثریت جن کا تعلق ریپبلکن اور ڈیموکریٹک دونوں جماعتوں سے ہے چاہتی ہے کہ امریکہ غزہ میں فلسطینی شہریوں کو ہونے والے نقصانات کو روکنے میں مدد کرے اور اسرائیل کی طرف سے حماس کے خلاف چھیڑی گئی جنگ ختم کی جائے۔

لیکن امریکی رائے عامہ کی حمایت موجودہ تنازع میں اسرائیل ماضی کے مقابلے میں زیادہ مضبوط دکھائی دیتا ہے۔

دو دن تک جاری رہنے والے اور جمعے کو ختم ہونے والے سروے کے نتائج سے ظاہر ہوا کہ 78 فیصد شرکا جن میں 94 فیصد ڈیموکریٹس اور 71 فیصد ریپبلکن شامل ہیں نے اس بیان سے اتفاق کیا کہ امریکی سفارت کاروں کو فعال طور پر ایک منصوبے پر کام کرنا چاہیےجس میں شہریوں کو غزہ میں لڑائی چھوڑ کر دوسرے ملک جانے کی اجازت دی جائے۔ 22 فیصد افراد نے نے اس رائے سے اختلاف کیا۔

نئے سروے کے مطابق تنازع میں اسرائیل کے موقف کے لیے امریکیوں کی حمایت 2014 کی رائے شماری کے مقابلے میں زیادہ تھی۔ نئی رائے شماری میں 41 فیصد شرکاء نے کہا کہ وہ اس بیان سے متفق ہیں کہ حماس کے ساتھ تنازع میں امریکہ کو اسرائیل کا ساتھ دینا چاہیے۔ اور 2 فیصد نے کہا کہ امریکہ فلسطینیوں کی حمایت کرنی چاہیے۔

2014 کے تنازعے کے دوران کرائے گئے رائٹرز کے سروے میں 22 فیصد شرکا نے کہا کہ امریکہ کو اسرائیلی موقف کی حمایت کرنی چاہیے اور 2 فیصد نے فلسطینی موقف کی حمایت کی تھی۔ سروے میں اسرائیل کے موقف کے لیے ریپبلکنز کی حمایت 54 فیصد رہی۔ اسرائیلی پوزیشن کے لیے ڈیموکریٹس کی حمایت 37 فیصد رہی۔

سروے کے شرکا کی ایک بڑی فیصد نے تنازع میں مختلف موقف اپنائے۔ 27 فیصد نے کہا کہ امریکہ کو ایک غیر جانبدار ثالث ہونا چاہیے اور 21 فیصد نے کہا کہ امریکہ کو بالکل مداخلت نہیں کرنی چاہیے۔

40 سال سے کم عمر کے تقریباً 40 فیصد جواب دہندگان نے کہا کہ امریکہ کو ایک غیر جانبدار ثالث ہونا چاہیے۔ سروے کے نتائج میں 20 لاکھ سے زائد آبادی والے حماس کے زیر کنٹرول علاقوں میں عام فلسطینیوں کی صورت حال کے بارے میں امریکیوں میں انتہائی تشویش کا اظہار کیا گیا۔

81 فیصد شرکا نے اس بیان سے اتفاق کیا کہ اسرائیل کو حماس کے خلاف اپنے انتقامی حملوں میں شہریوں کو ہلاک کرنے سے گریز کرنا چاہیے اور 19 فیصد نے اس بیان سے اختلاف کیا۔

شرکا کو اختیارات کی فہرست پیش کی گئی کہ موجودہ تنازع کا سب سے زیادہ ذمہ دار کون ہے تو ان میں سے 49 فیصد نے حماس کا انتخاب کیا اور 9 فیصد نے اسرائیل کا انتخاب کیا۔ رائٹرز کے سروے سے ظاہر ہوا کہ امریکیوں کو موجودہ صدر جو بائیڈن یا سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی بحران کو حل کرنے کی صلاحیت پر زیادہ اعتماد نہیں ہے۔ اس سروے میں 1003 افراد نے حصہ لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں