'جلد از جلد ترکیہ چھوڑ دیں': اسرائیل کی اپنے شہریوں کو ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غزہ کی پٹی میں ایک ہسپتال پر مہلک حملے کے بعد انتقامی حملوں کے خدشے کے پیش نظر اسرائیل نے اپنے شہریوں سے کہا ہے کہ وہ فوراً ترکیہ چھوڑ دیں۔

اسرائیل کی قومی سلامتی کونسل نے منگل کو دیر گئے اعلان کیا کہ "ترکیہ میں مقیم تمام اسرائیلیوں کو جلد از جلد وہاں سے چلے جانا چاہیے۔"

ایک اسرائیلی قونصلر نے اے ایف پی کو بتایا، "میں تصدیق کر سکتا ہوں کہ قومی سلامتی کونسل کی ترکیہ کے لیے سفری وارننگ کو بڑھا کر 4 کر دیا گیا ہے جو اعلیٰ ترین سطح ہے۔"

اسرائیل اور فلسطینیوں نے ایک دوسرے پر غزہ کے ہسپتال پر حملے کا الزام لگایا جس سے خطے میں اسرائیل کے خلاف مظاہروں کی ایک لہر شروع ہو گئی ہے۔

اس حملے کی مذمت کے لیے استنبول اور دارالحکومت انقرہ میں ہزاروں افراد نے اسرائیل کے سفارتی مشن کے باہر احتجاجی مظاہروں میں شرکت کی۔

گورنر کے دفتر نے بتایا کہ ترک پولیس نے استنبول میں اسرائیلی قونصل خانے میں گھسنے کی کوشش کرنے والے پانچ مظاہرین کو حراست میں لے لیا۔

مسئلۂ فلسطین کے حامی ترک صدر رجب طیب اردگان نے اسرائیل پر "خواتین، بچوں اور معصوم شہریوں کو پناہ دینے والے ہسپتال پر حملہ کرنے" کا الزام عائد کیا اور دنیا پر زور دیا کہ وہ غزہ میں ہونے والے المیے کو روکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں