لبنانی سرحد سے راکٹ داغے جانے کے جواب میں کارروائی کی گئی ہے: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے بدھ کے روز لبنان سے مارٹر گولے داغنے والے ایک گروپ کے خاتمے کا اعلان ایک ایسے وقت میں کیا جب اسرائیل اور فلسطینی تحریک حماس کے درمیان تنازع کی روشنی میں سرحد پر تشدد بڑھ رہا ہے۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا کہ اس نے اسی سیکٹر میں ٹینک شکن راکٹ فائر کرنے کا جواب دیا جس نے شمالی اسرائیل کے دیہات کو نشانہ بنایا تھا۔ بدھ کو شمالی اسرائیل میں سائرن بجائے گئے اور فوج نے کہا کہ نو گولے لبنان کی سرزمین سے اسرائیل کی طرف بڑھے۔

اسرائیلی فوج نے منگل کو اعلان کیا تھا کہ اس نے لبنان کے ساتھ اپنی سرحد پر دراندازی کی کوشش کے دوران کم از کم چار حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

7 اکتوبر کو جنگ کے آغاز سے لے کر 18 اکتوبر تک 12 روز کے دوران اسرائیل اور لبنان کی سرحد پر جھڑپوں میں لبنان کی طرف کے 20 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔ ان میں ایک صحافی اور دو عام شہری بھی شامل ہیں۔ ان جھڑپوں میں 3 اسرائیلی بھی مارے گئے ہیں۔ عالمی برادری نے حزب اللہ اور اسرائیلی فوج کے درمیان تنازع کے پھیلنے کے خدشے کا اظہار کیا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان ڈینیئل ہگاری نے منگل کو کہا تھا کہ ہم شمال میں چوکس ہیں، اگر حزب اللہ نے کوئی سنگین غلطی کی تو ہم بڑی طاقت سے جواب دیں گے۔ اسرائیل نے شمالی سرحد پر جھڑپوں کے بعد ملک کے شمال میں واقع 28 قصبوں سے ہزاروں مکینوں کو نکالنا بھی شروع کردیا ہے۔ جنگ کے بارہ روز میں 3478 فلسطینی شہید ہو چکے، دوسری طرف لگ بھگ 1400 اسرائیلی مارے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں