غزہ جنگ کے معیشت پر اثرات: اسرائیلی 'کریڈٹ ریٹنگ' کو کم کرنے کا جائزہ شروع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی مالیاتی ادارے 'موڈیز' نے حماس کے ساتھ اسرائیلی جنگ کے نتیجے میں اسرائیل کی 'کریڈٹ ریٹنگ' میں کمی کرنے کے لیے جائزہ لینا شروع کر دیا ہے۔

ایک ہفتے کے دوران یہ دوسری ریٹنگ کمپنی ہے جس نے اسرائیلی غیر ملکی اور مقامی کرنسی جاری کرنے والے کی 'ڈیفالٹ ریٹنگ' کو نئے سرے سے اپنے جائزے میں شامل کیا ہے۔ اس سے پہلے منگل کے روز 'فچ ریٹنگ' نے بھی حماس کے ساتھ اسرائیلی جنگ کے تناظر میں اسرائیل کی کرنسی ریٹنگ کا نئے سرے سے جائزہ لینے کا فیصلہ کیا تھا۔

امریکی ریٹنگ ایجنسی کی طرف سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ حماس کے ساتھ اسرائیل کے غیر متوقع تصادم کی وجہ سے اسرائیل کی ماضی کی کریڈٹ ریٹنگ اے ون کو کم کرنے کے لیے جائزہ لیا جارہا ہے۔

ایجنسی کے مطابق یہ صورت حال سات اکتوبر کے بعد سامنے آئی جب حماس نے اسرائیل کے جنوبی حصے میں بد ترین راکٹ حملے کیے۔ ان حملوں کی وجہ سے اثرات لمبی مدت کے لیے 'میٹیریل کریڈٹ امپیکٹ' لیے ہوئے ہوں گے۔ ماضی میں اسرائیلی 'کریڈٹ ریٹنگ' میں لچک کا ماحول نظر آتا رہا ہے۔

موڈی نے اعلان کیا ہے کہ اسرائیلی 'کریڈٹ ریٹنگ' کو نیچے لانے کے لیے اس کا جائزے کا عمل شروع ہو گیا ہے۔ جاری جنگ کی وجہ سے اسرائیل کی طویل مدتی غیر ملکی کرنسی اور مقامی کرنسی کی ریٹنگ پر بھی اثرات مرتب ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں