سعودی رضاکار ڈیجیٹل کیمپوں کے ساتھ عالمی رابطے بنا رہے ہیں

سہ روزہ عالمی مقابلے میں 174 ممالک کے 2 ملین سے زائد رضاکار شریک ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی دوستی کو فروغ دینے کی کوشش میں سعودی عرب انجمنِ رضاکاران (ساسا) جمبوری آن دی ایئر اور جمبوری انٹرنیٹ کیمپس میں حصہ لے رہی ہے۔

یہ عالمی اجتماع 22 اکتوبر تک جاری ہے جس میں دنیا بھر کے 174 ممالک کے 2 ملین سے زیادہ رضاکار شامل ہیں۔

ساسا کے نائب سربراہ ڈاکٹر عبدالرحمن ابراہیم المدیرس نے کہا کہ رضاکاروں کے ٹیلی کمیونیکیشن ٹیکنالوجیز کے بارے میں جاننے کے لیے یہ تقریب ایک راستے کا کام کرتی ہے کیونکہ وہ دوستی کی نشوونما کی راہ ہموار کرتے ہوئے ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کرتے ہیں۔

المدیرس نے مزید کہا کہ ایسوسی ایشن اس تقریب کے لیے "بہت باریک بینی سے تیاری" کر رہی ہے، یہ اپنے ہیڈ کوارٹر اور جوبیل صنعتی کالج میں ریڈیو سٹیشن قائم کر رہی ہے اور معلوماتی مرکز کو آراستہ کر رہی ہے۔ ساسا نے اس بات کو بھی یقینی بنایا کہ کلب کے ممبران انجمن کے مختلف شعبوں میں اپنے ساتھیوں کے ساتھ ہموار رابطے اور رجسٹریشن میں سہولت کے لیے اچھی طرح تیار تھے۔

کیمپوں کی یاد منانے کے لیے ایسوسی ایشن ریاض اور جبیل میں دو مرکزی تقریبات کا انعقاد کر رہی ہے۔ سعودی گرل رضاکار کمیٹی، رضاکار یونٹس اور دونوں جنسوں کے موبائل رضاکار دستوں کی نمائش کرتے ہوئے ساسا اپنے شعبوں کے تنوع کو ظاہر کرے گا۔

المدیرس نے کہا کہ اس سال کے جمبوری ایونٹس رضاکار کو 21ویں صدی کے ہنر سکھائیں گے۔

رضاکار انٹرنیٹ اور شوقیہ ریڈیو کا استعمال کرتے ہوئے ابلاغ کریں گے اور وہ ان تعلیمی سرگرمیوں میں حصہ لے سکتے ہیں جو ٹیم ورک کو فروغ دیتی ہیں اور بین الثقافتی تفہیم اور مہارتوں کی پرورش کرتی ہیں۔ یہ تقریب نوجوانوں کے مسائل کو حل کرنے کے لیے ایک پلیٹ فارم بھی فراہم کرتی ہے۔

جمبوری آن دی ایئر کی جڑیں 20ویں صدی کے نصفِ اول میں ہیں جب ریڈیو نے مواصلاتی شکل کے طور پر مقبولیت حاصل کی۔

افتتاحی جے او ٹی اے تقریب 1958 میں ہوئی تھی جبکہ پہلا جے او ٹی آئی کیمپ – جس نے انٹرنیٹ ٹیکنالوجیز کو اپنانے کی طرف نشان دہی کی – 1996 میں شروع کیا گیا تھا۔

اس کے بعد سے دونوں ایونٹس ضم کر دیئے گئے ہیں۔ عالمی اجتماع ہر سال اکتوبر کے تیسرے ہفتے کے آخر میں ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں