لندن کی 'انڈر گراونڈ ٹرین' میں بھی فلسطینیوں کے حامیوں کی گرمجوشی

ٹرین ڈرائیوربھی فلسطین کی آزادی کا حامی، فلسطین کے حق میں ویڈیو وائرل ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لندن کی انڈر گراونڈ چلنے والی ٹرین کے ڈرائیور کی فلسطین کی آزادی کے حق میں نعروں پر مبنی ویڈیو وائرل ہو گئی۔

ویڈیو میں ڈرائیور ٹرین کے ان مسافروں سے گفتگو کرتا ہے جو فلسطینیوں کی آزادی اور غزہ پر اسرائیلی بمباری کے خلاف احتجاجی مظاہرے میں شرکت کے لیے جارہے تھے۔

یہ درجنوں مسافر تھے جو سنٹرل لائن ٹرین پر سوار تھے۔ اس ٹرین کے ڈرائیور نے ان مسافروں سے بات کرتے ہوئے کہا میں بھی فلسطین کے حق میں مظاہرہ کرنے جانا چاہتا ہوں مگر مجھے چھٹی نہیں ملتی۔ اس لیے مجھے افسوس ہے کہ میں آپ کےساتھ مظاہرے میں شریک نہیں ہو سکتا۔

ڈرائیور نے مزید کہا 'میں کام سے چھٹی نہیں لے سکتا، لیکن میری آپ کے لیے بھر پور حمایت ہے۔ اس لیے آپ سب میرے ساتھ مل کر نعرہ لگاو، دریا سے سمندر تک فلسطین آزاد ہو گا۔'

ٹرین دارئیور کی اس ویڈیو پر سوشل میڈیا میں بعض لوگوں نے تنقید کی ہے کہ ڈرائیور نے یہ کہہ کر میں بھی آپ کے ساتھ ہوں، ہجوم کےجذبات کو بھڑکاوا دینے کی کوشش کی ہے۔ اس لیے اسے ملازمت سے برطرف کر دیا جائے۔

تاہم بہت سے لوگوں نے اسی سوشل میڈیا کے ذریعے ڈرائیور کی حمایت کی ہے اور کہا ہے کہ ٹرین کے اندر کا ماحول بالکل دوستانہ تھا اور ڈرائیور اپنے اقدامات کا فوری دفاع کرنے والا تھا۔ وہ مزیدار آدمی تھا اور ایک لیجنڈ تھا۔'

دریں اثنا ہزاروں مظاہرین نے لندن میں فلسطینیوں کے حق میں مارچ کیا اور مطالبہ کیا کہ اسرائیل پر دباو ڈالا جائے کہ وہ غزہ پر بمباری روکے۔ واضح رہے اسرائیل حماس جنگ تیسرے ہفتے میں داخل ہو گئی ہے۔

اس عرصے میں ہزاروں فلسطینی ہلاک اور ہزاروں ہی زخمی ہو چکے ہیں۔ لندن میں فلسطینیوں کے حق میں مظاہرہ کرنے والوں نے فلسطینی پرچم اٹھا رکھے تھے اور غزہ کا اسرائیل کی طرف سے کیا بد ترین 'محاصرہ' ختم کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں