سعودی نژاد کامیڈین کی لوگوں سے سوشل میڈیا کی خبروں کی تصدیق کرنے کی اپیل

چنگ وون-ہو نے سی این این کی سارا سڈنر کا حوالہ دیا جنہوں نے اپنی خبروں پر بعد میں معافی مانگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنوبی کوریائی-ویتنامی کامیڈین چنگ وون-ہو نے لوگوں پر زور دیا ہے کہ وہ آن لائن پوسٹ کی گئی خبروں کی صداقت کی جانچ کریں۔ اور انہوں نے اسرائیل-حماس جنگ کی کچھ میڈیا کوریج کو "بیانیے میں حسبِ منشاء تبدیلی" اور "پروپیگنڈا" قرار دیا۔

جدہ میں پیدا ہونے اور عمان میں پرورش پانے والے ایک دو-لسانی ٹیلی ویژن شخصیت چنگ نے کہا کہ وہ "انگریزی میں اپنی آواز اٹھانا" چاہتے ہیں کہ بچوں کے سر قلم کرنے کے حماس کے دعوے کیسے "جنگل کی آگ" کی مانند پھیلتے ہیں اور کیسے غلط معلومات نقصان دہ نتائج کی وجہ بن سکتی ہیں۔

انہوں نے کہا۔ "میں ایک ایسے بیانیے کو نمایاں کرنا چاہتا ہوں جسے اکثر بین الاقوامی برادری نے نہیں سنا۔ ایک پروپیگنڈہ مشین کام کر رہی ہے اور اس کی غلط معلومات اور بیانیے میں ہیراپھیری اس جنگ کا باعث بنی ہے۔"

انہوں نے مزید کہا۔ "یہ (پروپیگنڈہ مشین) اشتعال انگیز دعوے کرکے سچائی کو بدل دیتی ہے جیسے: 'انہوں نے بچوں کا سر قلم کیا۔'"

وائٹ ہاؤس اپنے اس دعوے پر پیچھے ہٹ گیا تھا کہ حماس کے عسکریت پسندوں نے کبتز پر حملے کے دوران اسرائیلی بچوں کا سر قلم کیا اور سی این این کی رپورٹر سارہ سڈنر نے ان معلومات کی تصدیق نہ کرنے پر بعد ازاں معافی مانگی تھی۔ ان باتوں کا حوالہ دیتے ہوئے چنگ نے کہا: "یہ جعلی خبر تھی لیکن اس سے جو نقصان ہونا تھا ہو گیا؛ یہ خبر سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی۔ ان غلط بیانیوں کے نتائج تباہ کن ہیں۔"

بین الاقوامی قانون کو برقرار رکھنے اور شہریوں کے خلاف جرائم کے ذمہ داروں سے جواب طلبی کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا: "حقیقت انصاف، مساوات اور امن کی تلاش کرنے والوں کی طرف ہے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں