لندن کا زیرِ زمین ٹرین ڈرائیور’آزاد فلسطین‘ کے نعرے لگانے پر معطل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لندن کی ایک زیرِزمین ٹرین کے حکام نے کہا کہ ایک ٹرین ڈرائیور کو پیر کو معطل کر دیا گیا کیونکہ وہ "آزاد، آزاد فلسطین" کے نعرے لگانے میں ظاہراً مسافروں میں پیش پیش تھا۔

ٹرانسپورٹ فار لندن (ٹی ایف ایل) - جو میٹرو نیٹ ورک چلاتا ہے - نے ایک بیان میں کہا کہ ڈرائیور کو مزید تفتیش کے لیے عارضی طور پر ڈیوٹی سے ہٹا دیا گیا ہے۔

یہ واقعہ ہفتے کے روز اس وقت پیش آیا جب برطانوی دارالحکومت میں تقریباً 100,000 مظاہرین نے فلسطینی حامی مظاہرے میں حصہ لیا۔

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو فوٹیج میں ڈرائیور کو ٹرین کے لاؤڈ سپیکر سسٹم پر "آزاد آزاد" کہتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔

پھر بھری گاڑی میں سوار مسافر "فلسطین" کا نعرہ لگا کر جواب دیتے ہیں۔

یہ نعرہ فلسطینیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے ہونے والے مظاہروں میں مقبول ہے۔

ٹی ایف ایل کے چیف آپریٹنگ آفیسر گلین بارٹن نے کہا، "ہم فوری اور مکمل طور پر اس فوٹیج کی تفتیش کر رہے ہیں جس میں دکھایا گیا ہے کہ ایک ٹیوب ڈرائیور عوام سے خطاب کرنے والے لاؤڈ سپیکر سسٹم کا غلط استعمال کرتے ہوئے ہفتے کو سینٹرل لائن ٹرین میں نعروں کی قیادت کر رہا تھا۔"

"اب ایک ڈرائیور کی شناخت کر کے اسے معطل کر دیا گیا ہے جبکہ ہم اپنی پالیسیوں اور طریقۂ کار کے مطابق واقعے کی مکمل تحقیقات جاری رکھے ہوئے ہیں۔"

برطانیہ کے سکیورٹی وزیر ٹام ٹیوگن ہاٹ نے ایکس (سابقہ ٹویٹر) پر لکھا تھا کہ کئی افراد کو یہ ویڈیو "خوفزدہ کرنے والی" لگی ہوگی۔

برطانیہ میں اسرائیل کے سفارتخانے نے کہا کہ لندن کے زیرِزمین ٹرین پر "ایسی عدم برداشت کو دیکھ کر شدید پریشانی ہوئی۔"

حماس کے حکام کے مطابق 7 اکتوبر کو اسرائیل پر حماس کے اچانک حملے - جس میں 1,400 افراد ہلاک ہوئے تھے - کے بعد سے غزہ پر اسرائیلی فضائی اور زمینی بمباری سے فلسطینی علاقے میں 5,000 سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں