پیرس اسرائیل اور فلسطین دونوں کا دوست ہے: فرانسیسی وزیر اعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس نے اسرائیل سے حماس کے جال میں نہ پھنسنے اور 7 اکتوبر کے حملوں کا مناسب جواب دینے کا مطالبہ کردیا۔

فرانسیسی وزیر اعظم ایلزبتھ بورن نے قومی اسمبلی میں بحث کے دوران کہا کہ حماس فلسطینی عوام کی نمائندگی نہیں کرتی۔ انہوں نے کہا پیرس اسرائیل اور فلسطینیوں کا دوست ہے۔ دونوں میں سے کوئی ایسا متاثر نہیں ہے جس کے لیے دوسرے سے کم رویا جائے۔ سب متاثرین برابر ہیں اور کسی کی زندگی کسی دوسرے سے کم قیمت نہیں ہے۔

انسانی بنیاد پر جنگ بندی

انہوں نے اعلان کیا کہ فرانس غزہ کی پٹی میں امداد کی تقسیم کی اجازت دینے کے لیے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کا مطالبہ کر رہا ہے۔ رفح گزرگاہ کو کھولنا ابھی بھی بہت محدود ہے۔ ہم رفح گیٹ کو کھولنے کا مطالبہ کرتے ہیں تاکہ نئی امداد کو گزرنے کی اجازت دی جاسکے۔ امداد کی تقسیم کے لیے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کی ضرورت ہے جو مستقل جنگ بندی کا باعث بن سکتی ہے۔

یہ بھی بتایا گیا کہ فرانسیسی وزیر خارجہ کیتھرین کولونا غزہ پر سلامتی کونسل میں بات چیت میں سہولت فراہم کرنے کے لیے پیر کی رات نیویارک کے لیے روانہ ہوں گی۔

اسرائیل کا ساتھ

واضح رہے اتوار کو امریکہ، کینیڈا، فرانس، جرمنی، اٹلی اور برطانیہ کے رہنماؤں نے ایک مرتبہ پھر اسرائیل کی حمایت کااعلان کیا اور اس کے اپنے دفاع کے حق کی تصدیق کی۔ تاہم ان ملکوں نے ساتھ ہی اس پر بھی زور دیا کہ اسرائیل بین الاقوامی انسانی قانون کی پاسداری کرے اور شہریوں کو تحفظ فراہم کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں