سمندری طوفان "تیج" سے تباہی، یمنی صدر رشاد نے شراکت داروں سے مدد مانگ لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

منگل کے روز یمن کی صدارتی کونسل کے صدر رشاد العلیمی نے ریاست کے اس عزم کا اعادہ کیا کہ وہ مصیب زادہ افراد کو امداد فراہم کرنے اور قدرتی آفات سے نمٹنے کے لیے اپنی ذمہ داریاں نبھانے کے لیے تیار ہیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار یمن کے مشرقی گورنریٹس کے طوفان تیج کے اثرات میں داخل ہونے کے ایک دن بعد کیا۔

رشاد العلیمی نے سعودی عرب کے بھائیوں کی جانب سے فوری انسانی مداخلت کی تعریف کی۔ اانہوں نے کہا سعودی عرب کے افراد ہمیشہ مختلف حالات میں یمنی عوام کے ساتھ وقت پر کھڑے ہوئے ہیں۔

"ایکس" پلیٹ فارم پر انہوں نے تمام علاقائی اور بین الاقوامی اداکاروں اور قومی و نجی شعبے سے تباہی کے اثرات کو کم کرنے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان مشکل دنوں میں جن میں المہرہ گورنریٹ ایک نئے خطرناک طوفان سے متاثر ہوا ہے، ہم خدا سے دعا گو ہیں کہ وہ اپنے لوگوں کو نقصان سے محفوظ رکھے۔

اس تناظر میں حضرموت گورنریٹ میں ابتدائی وارننگ سینٹر نے اعلان کیا کہ طوفان "تیج" کی سطح منگل کی صبح کے اوقات سے کم ہوگئی ہے۔ مرکز نے توقع ظاہر کی ہے کہ طوفان حضر موت گورنری کے مشرقی علاقوں میں اگلے 48 گھنٹوں کے دوران بتدریج اور مکمل کمی کے ساتھ ڈپریشن میں تبدیل ہوتا رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں