مشرق وسطیٰ

ماسکو: حماس کے نمائندے سے ایران اور روس کے نائب وزرائے خارجہ کی الگ الگ ملاقات

ایران کا غزہ جنگ بندی اور غزہ کا محاصر ختم کرنے جبکہ روس نے مغویوں کی رہائی اور کشیدگی کے خاتمے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران اور حماس کے درمیان ماسکو میں ایک اعلیٰ سطح کا رابطہ ہوا ہے۔ ایرانی نائب وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے ماسکو میں حماس کے نمائندے سے ملاقات کی ہے اور حماس کے ساتھ اسرائیل کے ساتھ غزہ کے لیے انسانی بنیادوں پر مدد و حمایت ملنے کی صورت میں جنگ بندی کے امکانی معاملے پر تبادلہ خیال کیا ہے۔ روسی خبر رساں ادارے تاس کے مطابق یہ اہم ملاقات جمعرات کو ہوئی۔

اسرائیل کی اس اہم ملاقات کے لیے اظہار مذمت کی توقع ہو سکتی ہے۔ جس کا وزیر خارجہ پہلے ہی روس کی طرف سے حماس نمائندے کو ماسکو آنے کی دعوت دینے کو دہشت گردی قرار دیا جا چکا ہے۔ نیز روس سے مطالبہ کیا جا چکا ہے کہ حماس وفد کو روس سے فوری نکالا جائے۔ روس نے اس کے جواب میں کہا تھا کہ تمام فریقوں کے ساتھ رابطہ رکھنا ضروری ہے۔

ایران کے نائب وزیر خارجہ اور حماس کے نمائندہ وفد کا روسی دورہ یہ ظاہر کرتا ہے کہ روس یوکرین پر قبضے کے باوجود مشرق وسطیٰ کے تصادم میں اپنا اثر ورسوخ بروئے کار لانا چاہتا ہے۔

تاہم ابھی ماسکو سے یہ واضح نہیں ہو سکا کہ حماس کے ساتھ ملاقات صرف ایرانی نائب وزیر خارجہ علی باقری کانی نے کی ہے یا روس، ایران اور حماس تینوں کے درمیان سہ فریقی ملاقات ومشاورت کا ماحول رہا ہے۔

تاس کے مطابق ایرانی وزیر کی حماس کے رہنما ابو مرزوق ساتھ ملاقات میں ترجیح بات چیت کے ذریعے جنگ بندی اور غزہ کے اسرائیلی محاصرے کے خاتمہ پر رہی۔ تاس کے مطابق ایرانی نائب وزیر خارجہ نے روس کے نائب وزیر خارجہ میخائل بوگدانوف کے ساتھ بھی ملاقات کی ہے۔ واضح رہے روسی نائب وزیر خارجہ مشرق وسطیٰ کے خصوصی نمائندے کے طور پر بھی خدمات انجام دیتے ہیں۔

خبر رساں ادارے کے مطابق روسی وزارت خارجہ کا کہنا یہ ہے کہ مذاکرات میں فوکس غزہ میں جاری کشیدگی کو روکنا اور غزہ کے لیے انسانی بنیادوں فلسطینیوں کے لیے مدد بھجوانا ہے۔

ایک الگ ملاقات میں روسی نائب وزیر خارجہ نے حماس کے نمائندے سے مغویوں کی رہائی اور غیر ملکیوں انخلا پر بات کی ہے۔

تاس رپورٹ کے مطابق روس اسرائیل اور حماس دونوں کو جنگ کی وجہ سے تنقید کا نشانہ بھی بنا رہا ہے اور دونوں کے ساتھ تعلقات کو بھی اہمیت دیتا ہے۔ روس کی کوشش ایک توازن قائم رکھنے کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں