حماس کو آٹھ روسی اسرائیلی یرغمالیوں کی تلاش کیوں ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روسی خبرایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ حماس نے کہا ہے کہ غزہ میں زیرحراست آٹھ روسی نژاد اسرائیلیوں کو رہا کر دیا جائے گا۔ روس نے غزہ میں یرغمال بنائے گئے افراد کی رہائی کے لیے سفارتی کوششیں شروع کر دی ہیں۔

خبر رساں اداروں نے رپورٹ کیا ہے کہ حماس ماسکو کی درخواست پر روسی اسرائیلی دوہری شہریت رکھنے والے ان آٹھ لوگوں کو تلاش کرنے کی کوشش کر رہی ہے جنہیں فلسطینی عسکریت پسند گروپ کے اسرائیل پر حملے کے دوران یرغمال بنایا گیا تھا۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق روس کے حماس کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں۔

آر آئی اے نووستی نیوز ایجنسی کے مطابق حماس کے سینیئر نمائندے موسیٰ ابو مرزوق نے بتایا کہ ’روس کی جانب سے وزارت خارجہ کے ذریعے ہمیں ان شہریوں کی فہرست موصول ہوئی ہے جن کے پاس دوہری شہریت ہے۔‘

’ہم ان لوگوں کو تلاش کر رہے ہیں۔ یہ مشکل کام ہے لیکن ہم تلاش کر رہے ہیں اور جب ہم انہیں تلاش کر لیں گے تو ہم انہیں رہا کر دیں گے۔’ہم اس فہرست پر بہت توجہ دے رہے ہیں اور اس پر احتیاط سے کام کریں گے کیوں کہ ہم روس کو اپنا قریب ترین دوست سمجھتے ہیں۔ ’وہ پرامن شہری جنہیں یرغمال بنایا گیا اور جو اب غزہ میں ہیں، ہم ان کے ساتھ مہمانوں کی طرح برتاؤ کرتے ہیں۔‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں