اسرائیل غزہ میں اپنی فوجی کارروائیوں میں بین الاقوامی قوانین کی پابندی کرے: نیٹو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شمالی اوقیانوس کے ممالک کے عسکری اتحاد [نیٹو] کے سیکرٹری جنرل جینز سٹولٹن برگ نے غزہ جنگ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ حماس کے حملوں پر اسرائیل کے ردعمل کو بین الاقوامی قوانین کی حدود کے اندر ہونا چاہیے۔

انہوں نے منگل کو اوسلو میں ایک تقریب سے خطاب میں کہا کہ ’’ہم اسرائیل پر حماس کے دہشت گردانہ حملوں کی پُر زور مذمت کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ"اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی ضروری ہے کہ اسرائیل کا ردعمل بین الاقوامی قانون کے دائرے میں ہو، وہ شہریوں کی حفاظت کو یقینی بنائے اور انسانی امداد غزہ تک پہنچانے میں سہولت فراہم کرے‘‘۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ نیٹو ممالک نے 12 اکتوبر کو اسرائیل کے ساتھ اپنی یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے اسی وقت حماس کے حملے کا مساوی جواب دینے کا مطالبہ کیا تھا۔

انہوں نے حماس سےتمام اسرائیلی قیدیوں کو فوری رہا کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔

اسرائیل کی جانب سے 7 اکتوبر کو غزہ کی پٹی پرشروع کی گئی شدید بمباری کے نتیجے میں اب تک تقریبا ساڑھے آٹھ ہزار فلسطینی شہید اور اکیس ہزار زخمی ہوچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں