فلسطین اسرائیل تنازع

سعودی وزیردفاع شہزادہ خالد بن سلمان کادورہ امریکہ,امریکی قومی سلامتی کے مشیرسے ملاقات

علاقے اور دنیا میں 'ڈویلپ منٹس 'پر تبادلہ خیال، ملاقات میں غزہ میں جنگی اور معصوم شہریوں کے تحفظ پر زور دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان اور امریکی قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان کی ملاقات میں غزہ کی صورت حال اور امکانی طور پر مشرق وسطیٰ پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ خصوصا ً یمن میں سلامتی کی امور پر بات چیت کی گئی ہے۔

شہزادہ خالد ان دنوں ایک وفد کی قیادت کرتے ہوئے امریکی دورے پر ہیں۔ دونوں طرف کے سلامتی و دفاع کے امور کے ذمہ داروں نے باہم غزہ میں شہری ہلاکتوں کی غیر معمولی سطح پر بھی بات چیت کی۔

اس ملاقات کے بارے میں شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا وہ امریکی سلامتی کے مشیر سے ملاقات کر کے سعودی شراکت داری نیز غزہ میں فوری جنگ بندی کے لیے بات اہم رہی۔ تاکہ شہریوں کے تحفظ کے امور زیر بحث آ سکیں اور امدادی کارروائیوں کو ممکن بنایا جاسکے۔

سعودی خبر رساں ادارے کے مطابق شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا تھا' ہم نے یمن میں امن کی بحالی کے لیے سعودی عرب کی کوششوں اور بحران کے خاتمے کے امور پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

شہزادہ خالد بن سلمان اور جیک سلیوان کی ملاقات کے دوران علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر سامنے آنے والے واقعات بھی زیر بحث آئے۔ بطور خاص غزہ اور اس کے گردو پیش کے بارے میں بات چیت کی گئی۔

شہزادہ خالد بن سلمان نے اس ملاقات میں غزہ میں جنگ بندی پر زور دیا اور عام شہریوں کی زندگیوں کو محفوظ بنانے کے لیے، نیز اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں بے گھر ہونے والوں کا معاملہ بھی دو طرفہ گفتگو کا اہم موضوع تھا۔

دوسری جانب امریکی مشیر نے صدر جوبائیڈن کے جاری شدہ بیان کا حوالہ دیا ، جس میں جوبائیڈن نے اپنے شراکت داروں کے ریاستی اور غیر ریاستی عناصر کے خلاف تحفظ اور حمایت کے ساتھ اپنی گہری کمٹمنٹ کا اظہار کیا۔

اس سلسلے میں صدر جوبائیڈن نے ایرانی حمایت یافتہ گروپوں سے اپنے پارٹنرز کے تحفظ کے لیے بھی گہری وابستگی کا اظہار کیا۔ سعودی وفد میں امریکہ کے لیے سفیر ریما بنت بندر اور سعودی مشن کے نائب سربراہ شہزادہ مصعب بن محمد بطور خاص شامل تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں