جرمنی،جنگ زدہ علاقوں میں خواتین کےخلاف جنسی جرائم کوجنگی جرائم میں شامل کرنےکی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یوکرین جنگ کے بعد سے یوکرین کی خواتین کے خلاف مبینہ طور پر بڑھے ہوئے جنسی جرائم کے باعث جرمنی جنگی جرائم کے قانون کو وسعت دے گا۔ جنگی علاقوں میں خواتین کے خلاف جنسی جرائم کو باضابطہ طور پر جنگی جرم کا درجہ دیا جائے گا۔

اس سلسلے میں جرمنی کے بائیں بازو کے اتحاد نے وزارت انصاف کے اقدامات کی منظوری دے دی ہے۔

اس منظوری کے نتیجے میں جرمنی کے ضابطہ فوجداری کا دائرہ وسعت پائے گا اور جرمنی کو یہ اختیار ہو گا کہ وہ ملک سے باہر پیش آنے والے واقعات کی تحقیقات کر سکے جو جنگی علاقوں میں جنسی جرائم سے متعلق ہیں۔

خواتین کے خلاف جنسی جرائم کو جنگ زدہ علاقوں میں عام طور پر ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے، اسی طرح دہشت گردی کے شکار ملکوں میں بھی اس کا خطرہ رہتا ہے۔ جرمنی کی فیملی ایند ویمن افئیرز کی وزیر لیزا پاؤس نے یہ بات میڈیا کو بتائی ہے۔

پاؤس نے کہا جرمنی اس کوشش میں رہا ہے کہ جنسی جرم کا نشانہ بننے والوں کو ایسے مقدمات میں فریق بننے کا موقع دلوائے۔ تاکہ ایسے متاثرہ افراد شریک مدعی بن سکیں۔ اس کوشش میں یوکرین جنگ کے واقعات کا بھی بڑا دخل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں