سکاٹ لینڈ کے فرسٹ منسٹر کے ساس اور سسر غزہ سے بحفاظت نکل گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سکاٹ لینڈ کے فرسٹ منسٹر حمزہ یوسف نے بتایا ہے کہ ان کی اہلیہ نادیہ کے والدین کئی ہفتے بعد بحفاظت غزہ سے نکل چکے ہیں۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق حمزہ یوسف کی اہلیہ کے والدین سات اکتوبر کو اسرائیل اور فلسطین کے درمیان جنگ چھڑنے کے بعد غزہ میں پھنس گئے تھے۔

فیملی ارکان کے غزہ سے بحفاظت نکلنے پر حمزہ یوسف اور اہلیہ نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ گذشتہ چار ہفتہ کسی ڈراؤنے خواب سے کم نہیں تھے۔

اپنی ایکس پوسٹ میں انہوں نے لکھا کہ ’ہمیں بہت راحت ملی ہے کہ نادیہ کے والدین غزہ سے نکل چکے ہیں۔ ہم گذشتہ چند ہفتوں کے دوران حمایت کے پیغامات کے لیے ہر ایک کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔‘

ان کے مطابق ’ہمارے خیالات ان لوگوں کے ساتھ ہیں جو غزہ کو چھوڑ نہیں سکتے اور اب بھی مشکلات کا شکار ہیں۔ ہم امن کے لیے اپنی آواز بلند کرتے رہیں گے۔‘

کئی دن غزہ میں پھنسے رہنے کے بعد حمزہ یوسف کے ساس سسر سمیت 127 افراد کو آج رفع کراسنگ عبور کرنے کی اجازت مل گئی تھی۔

واضح رہے کہ غزہ میں اسرائیلی وحشت کا کھیل جاری ہے۔

فلسطینی وزارت صحت کی جانب سے جاری بیان کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اسرائیلی جارحیت سے مزید 166 فلسطینی شہید ہوئے، جس کے بعد 7 اکتوبر سے اب تک شہید ہونے والے افراد کی تعداد 9227 ہوگئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں