جبالیہ کیمپ،'کیامیں آپ سے یہ سن رہاہوں کہ آپ نے جانتےبوجھتے معصوم شہریوں پربم گرائے؟

ٹی وی انیکر کا اسرائیلی فوجی ترجمان سے تیکھا سوال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

معروف ٹی وی چینل کے نامور اینکر ولف بلٹزر نے اسرائیلی فوج کے نمائندے کو غزہ میں پناہ گزین کیمپ پر بمباری کر کے کم از کم پچاس شہریوں کو ہلاک کر دینے پر آڑے ہاتھوں لیا۔

واضح رہے غزہ میں مجموعی طور پر اسرائیل نے بمباری کر کے 9000 سے زائد شہریوں کو شہید کر دیا ہے۔ جن میں اکثریت بچوں اور عورتوں کی ہے۔ لیکن اس کے باوجود اسرائیل اور اس کے سرپرست ملکوں کی پختہ رائے ہے کہ جنگ بندی نہیں کی جائے گی اور بمباری تیز تر کی جائے گی۔ جیسا کہ کی بھی جا چکی ہے۔

اسی سلسلے میں ہسپتالوں ، سکولوں ، مسجدوں کو بطور خاص بمباری کا نشانہ بنانے والے اسرائیل نے غزہ میں پناہ گزین کیمپ کو بھی نشانہ بنایا ہے اور اب تک کم از کم 50 شہریوں کی ہلاکت کی اطلاع ہے۔

ولف بلٹزر نے کہا ' اگر حماس کا کمانڈر بھی کیمپ میں تھا تو لیکن وہ کمپ تو پناہ گزینوں کا تھا؟ اس کے باوجود اسرائیل نے اس پر بم گرائے، یہ جانتے بوجھتے کہ اس کے نتیجے میں عام شہریوں کی بڑی تعداد، عورتیں ، بچے مارے جائیں گے۔ کیا میں یہی سن رہاں ہوں کہ آپ کہہ رہے ہیں ہاں ہم نے اس کے باوجود بمباری کی ؟ اینکر نے مزید پوچھا کیا آپ جانتے تھے کہ پناہ گزین کیمپ میں معصوم شہری رہتے ہیں ؟

اس پر اسرائیلی فوج کے ترجمان کا کہنا تھا 'یہ جنگ کا المیہ ہوتا ہے اس میں معصوم شہری بھی مارے جاتے ہیں۔ ہم نے ان شہریوں کو کہہ دیا تھا کہ جنوبی غزہ کی طرف نکل جائیں۔'

اینکر نے مزید کہا 'یوں تم لوگوں نے فیصلہ کر لیا کچھ بھی ہو بم گرانے ہیں؟ '

اسرائیلی فوجی ترجمان ہیچٹ نے کہا 'ہمارے لیے جو کچھ بھی ممکن ہے ہم کر رہے ہیں۔ تاکہ شہریوں کا جانی نقصان کم سے کم ہو۔' ہمارا یہ حملہ حماس کے ایک کمانڈر کے خلاف تھا۔ اس لیے عام لوگوں کا نقصان کم کیا گیا۔'

ہمارا نشانہ وہ کمانڈر تھا ، جس نے بہت سے اسرائیلیوں کو مارا ہے۔ آپ کو اس حماس کمانڈر کے بارے میں جلد ڈیٹا مل جائے گا کہ یہ کمانڈر کون تھا۔'

CNN
CNN

'ہم شہریوں کو بچانے کے لیے وہ سب کر رہے ہیں جو ہم کر سکتے ہیں۔ یہ ایک پیچیدہ میدان جنگ ہے۔ وہاں حماس کا انفراسٹرکچر ہو سکتا ہے، سرنگیں ہو سکتی ہیں۔'

خیال رہے غزہ پر مسلسل بمباری ہی نہیں بد ترین فوجی ناکہ بندی بھی جاری ہے۔ پانی ، بجلی ایندھن ، خوراک اور ادویات بھی سویلینز کو پہنچنے نہیں دی جارہی ہیں۔ رفح کے باہر ٹرکوں کی لمبی قطاریں ہیں۔ تاہم اسرائیلی فوجی ترجمان کا دعویٰ تھا ، ' ہمارے لیے جو کچھ بھی ممکن ہے ہم کر رہے ہیں۔'

ترجمان نے مزید کہا ' کئی حماس دہشت گرد ہم نے اسی بمباری میں مارے ہیں ، انہی میں بیاری بھی شامل ہے جبالیہ کیمپ میں حماس کمانڈر بیاری۔' ترجمان نے کہا ' اسی کمانڈر نے نکبہ فورس دوسروں کے ساتھ مل کر بنائی تھی ۔

یاد رہے بہت سے ملکوں کی طرف سے پناہ گزین کیمپ پر اسرائیلی بمباری کی مذمت کی ہے۔ مصری وزارت نے اسرائیلی حملے کو ' غیر انسانی ٹارگٹنگ ' قرار دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں