اسرائیل کا اپنے شہریوں سے سفری پلان پر نظر ثانی پر زور

خطرناک قرار دیے گئے ممالک کی فہرست جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جمعہ کے روز اسرائیلی حکام نے اپنے شہریوں پر زور دیا کہ وہ بیرون ملک سفر کے کسی بھی منصوبے پر نظر ثانی کریں۔ سفر کرنے والوں سے کہا ہے کہ وہ اپنی یہودی یا اسرائیلی شناخت ظاہر کرنے سے گریز کریں۔

ایک مشترکہ بیان میں اسرائیل کی وزارت خارجہ اور قومی سلامتی کونسل نے کہا کہ اسرائیلیوں کو ملک چھوڑنے سے پہلے "اپنے سفری منصوبوں کا جائزہ لینا چاہیےاور ملک سے باہر رہتے ہوئے "اضافی احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں"۔

بیان میں اسرائیلیوں سے کہا گیا ہے کہ "ان ممالک کا سفر نہ کریں جن پر سفری وارننگ دی گئی ہو۔ان میں عرب اور مشرق وسطیٰ کے ممالک، شمالی قفقاز کے ممالک اور ایران کی سرحد سے متصل ممالک شامل ہیں"۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ "ان ممالک کا سفر کرنے والوں کو جن کے پاس سفری وارننگ نہیں ہے انہیں اسرائیل کے خلاف مظاہروں سے آگاہ ہونا چاہیے"۔

حکومت نے اسرائیلیوں کو مشورہ دیا کہ وہ اجنبی لوگوں کے ساتھ "اسرائیلی سکیورٹی سروسز بہ شمول فوج میں خدمات" پر بات کرنے سے گریز کریں۔

وزارت خارجہ اور قومی سلامتی کونسل نے اس سے قبل متعدد ممالک کے لیے سفری انتباہات جاری کیے تھے اور ان کا دورہ کرنے والے اسرائیلیوں سے کہا تھا کہ وہ جلد از جلد مصر، اردن اور ترکیہ سے نکل جائیں‘‘۔

اس ہفتے کے شروع میں اسرائیلی شہریوں کو روسی شمالی قفقاز کا سفر کرنے سے گریز کرنے کے لیے نیا مشورہ جاری کیا گیا تھا، جس میں اس بات پر زور دیا گیا تھا کہ انہیں داغستان کے ایک ہوائی اڈے پر اسرائیل سے آنے والے طیارے کے مظاہرین کی جانب سے تعاقب کے بعد علاقہ چھوڑ دینا چاہیے‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں