محمود عباس نے روس کا دورہ ملتوی کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

روس نے اعلان کیا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے اپنا دورہ روس ملتوی کر دیا ہے۔ محمود عباس کا یہ دورہ اسی ماہ ہونا طے پایا تھا۔ اس سے پہلے روس نے محمود عباس کے امکانی دورے کی اطلاع متعدد بار دی تھی تاہم کوئی متعین تاریخ سامنے نہیں آئی تھی۔

جمعہ کے روز نائب وزیر خارجہ نے میخائل بوگدانوف نے میڈیا کو بتایا محمود عباس کا دورہ ملتوی ہو گیا ہے۔ نائب وزیر خارجہ کہا کہنا تھا ' دورہ فلسطینی اتھارٹی کی درخواست پر ملتوی کیا گیا ہے۔'

روس اسرائیل اور فلسطین دونوں کےساتھ تعلقات کار رکھنے والے ملکوں میں شامل ہے۔ پچھلے دنوں حماس کے اعلیٰ سطح کے وفد نے بھی ماسکو کا دورہ کیا ہے۔ جس میں ماسکو کی طرف سے غزہ میں موجود مغویان کی رہائی کے لیے بات کی گئی۔

تاہم امریکہ اور اسرائیل نے اس دورے کو سخت ناپسند کیا اور اس پر تنقید کی تھی۔ روس نے اسرائیل اور امریکہ سمیت بعض یورپی ملکوں کی طرح حماس کو دہشت گرد تنظیم تسلیم نہیں کیا ہے ۔

روسی نائب وزیر خارجہ نے محمود عباس کے دورے کے التوا کی وجہ بتاتے ہوئے کہا فلسطینی اتھارٹی کی طرف سے کہا گیا ہے ' صورت حال بہت مشکل ہو گئی ہے اس لیے عباس خطے کو چھوڑ نہیں سکتے۔' نائب وزیر خارجہ نے مزید کہا ان کا فلسطینی ذمہ داروں کے ساتھ فون پر مسلسل رابطہ رہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں