ریپڈ سپورٹ فورسز نے شمالی دارفور انفنٹری بریگیڈ پر کنٹرول کا اعلان کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ریپڈ سپورٹ فورسز نے "ایکس" پلیٹ فارم کے ذریعے اعلان کیا ہے کہ اس نے بدھ کو میجر جنرل ابو نشوک کی قیادت میں شمالی دارفور ریاست میں علاقے ’’ام کدا‘‘ پر مکمل کنٹرول حاصل کرلیا ہے۔ آر ایس ایف نے کہا کہ وہ شمالی دارفور کے دارالحکومت ’’ الفاشر‘‘ میں چھٹی ڈویژن کے لیے حتمی وارننگ جاری کر رہے ہیں۔

’’ الفاشر‘‘ شہر میں سوڈانی فوج اور سریع الحرکت افواج کے درمیان پرتشدد جھڑپیں شروع ہوئی تھیں۔ چند روز بعد ریپڈ سپورٹ فورسز نے دارفور کے علاقے کے 5 میں سے 3 اہم شہروں پر کنٹرول کا اعلان کیا۔ ان علاقوں میں وہاں کا آرمی ہیڈکوارٹرز ’’ نیالا‘‘ بھی شامل ہے۔ یہ خرطوم کے بعد دوسرا سب سے بڑا شہر ہے۔ اسی طرح مغربی ریاستوں میں فوج کا کمانڈ سینٹر ’’وزالنجی‘‘ اور مغرب میں’’ الجننیہ‘‘ پر بھی کنٹرول کا اعلان کیا گیا۔

سوڈانی فوج اب بھی شمالی دارفور میں الفاشر اور مشرق میں ’’الضعین‘‘ میں اپنے اڈے برقرار رکھے ہوئے ہے۔

بدھ کو سوڈانی فوج اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان دارالحکومت کے مغرب میں واقع شہر ’’ ام درمان‘‘اور خرطوم کے جنوب میں آرمرڈ کور کے بڑے حصوں میں ہلکے اور بھاری ہتھیاروں کا استعمال کرتے ہوئے شدید جھڑپیں ہوئیں۔ جنگی طیارے اور ڈرون بھی پرواز کرتے رہے۔ القضارف میں سینکڑوں سوڈانیوں کو ایک سکول سے نکال دیا گیا جہاں انہوں نے ملک کے مشرق میں پناہ لی تھی۔

ایجنسی فرانس پریس کے مطابق خرطوم کے ایک بے گھر شخص حسین جمعہ نے بتایا کہ پولیس فورس آئی اور گورنر کے فیصلے کے مطابق ہمیں سکول چھوڑنے کا حکم دیا اور ہم پر آنسو گیس کی شیلنگ کی۔

القضارف میں اس وقت 2 لاکھ 73 ہزار افراد مقیم ہیں جو اپریل میں سوڈانی فوج اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان شروع ہونے والی جنگ کی وجہ سے بے گھر ہوئے تھے۔

حسین جمعہ نے مزید کہا کہ ہم 770 لوگ ہیں جو خرطوم کی جنگ سے بھاگ گئے تھے اور اس سکول میں رہائش پذیر تھے۔ ہمیں خوراک کی بہت کم امداد مل رہی تھی۔ اب ہم نہیں جانتے ہمیں کیوں نکالا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ ہزاروں افراد اس اسکول سے ملتی جلتی عارضی پناہ گاہوں میں مقیم ہیں جہاں انہیں خوراک، پینے کے پانی اور صحت کی سہولیات کی شدید قلت کا سامنا ہے۔

دریں اثنا خرطوم کے جنوب میں ’’الشجرہ‘‘ کے علاقے میں آرمرڈ کور میں فوج اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان دوبارہ لڑائی شروع ہوگئی ہے۔ اس علاقے میں حالیہ دنوں میں فریقین کے درمیان شدید لڑائی ہوئی ہے۔ فوج اس بات کی تصدیق کررہی ہے وہ ریپڈ سپورٹ فورسز کے حملے کو پسپا کر رہی ہے۔

انسانی امداد

فیڈرل اتحاد پارٹی جو فورسز آف فریڈم اینڈ چینج الائنس کا حصہ ہے نے مسلح افواج اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے درمیان جدہ پلیٹ فارم مذاکرات میں انسانی امداد میں اضافے اور اعتماد سازی کے اقدامات پر عمل درآمد کے لیے کیے گئے وعدوں کا خیرمقدم کیا ہے۔

پارٹی نے ایک بیان میں کہا کہ اس مرحلے پر یہ وعدے ایک ایسے قدم کی نمائندگی کرتے ہیں جو ایک جامع اور مستقل جنگ بندی کے معاہدے تک پہنچنے تک برقرار رکھا جا سکتا ہے۔ حالیہ جنگ سے سوڈانی عوام بے چین ہیں۔ بیان میں دونوں فریقوں پر زور دیا گیا ہے کہ وہ حالیہ معاہدہ پر مکمل طور پر عمل کریں۔

سعودی وزارت خارجہ نے منگل کو ایکس پلیٹ فارم پر شائع ہونے والے ایک بیان میں کہا تھا کہ جدہ مذاکرات کے سہولت کاروں نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ان میں شریک سوڈانی فریقوں نے اعتماد سازی کے اقدامات پر اتفاق کیا ہے جس میں فوج کے درمیان مواصلاتی طریقہ کار اور تیز رفتار مدد میں شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں