قاھرہ انسانی بنیادوں پر غزہ میں جنگ بندی کے قریب پہنچ گیا: مصری ذرائع

غزہ کی پٹی کے ایک محلے میں گھات لگا کر حملے میں اسرائیلی فوجیوں کو مار دیا: القسام بریگیڈز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا کہ حماس شمالی غزہ کی پٹی کا کنٹرول کھو چکی ہے۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان ڈینیئل ہگاری نے کہا ہے کہ غزہ میں جنگ بندی نہیں ہو گی تاہم مخصوص اوقات میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کی اجازت دی جائے گی تاکہ شہریوں کو جنوب کی طرف جانے کی اجازت دی جا سکے۔ غزہ میں حالیہ دنوں میں بارہا اسرائیلی دراندازی کی جارہی ہے۔

ہگاری نے مزید کہا کہ ہم نے 50000 غزہ کے باشندوں کو غزہ کی پٹی کے شمال سے جنوب کی طرف جاتے دیکھا۔ وہ اس لیے آگے جارہے ہیں کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ حماس شمال پر کنٹرول کھو چکی ہے۔۔ اس اعلان کے ساتھ ہی وائٹ ہاؤس نے کہا کہ غزہ میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی گھنٹوں یا دنوں تک جاری رہ سکتی ہے۔

وائٹ ہاؤس نے کہا کہ غزہ سے تمام یرغمالیوں کو نکالنے کے لیے ایک سے زیادہ جنگ بندی نہیں کی جا سکتی۔ قیدیوں اور یرغمالیوں کے تبادلے کے لیے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کی جا سکتی ہے۔

باخبر مصری ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ قاہرہ غزہ کی پٹی میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی اور قیدیوں اور یرغمالیوں کے تبادلے کے قریب پہنچ یا ہے۔ ذرائع نے مزید کہا کہ نجی قاہرہ نیوز چینل کے مطابق غزہ کی پٹی میں انسانی بنیادوں پر جنگ بندی تک پہنچنے کے لیے مصر کے گہرے رابطے ہیں۔

یہ بات اس وقت سامنے آئی ہے جب حماس تحریک کے قریبی ذرائع نے 12 مغویوں کی رہائی کے بدلے تین روزہ جنگ بندی کے حوالے سے قطر کی ثالثی میں اسرائیل کے ساتھ مذاکرات کے وجود کا اعلان کیا تھا۔ ان 12 فاراد میں سے نصف امریکی ہیں۔

ذرائع نے تصدیق کی کہ فی الحال جنگ بندی پر پیشرفت کا انحصار جنگ بندی کی "مدت" اور "شمالی غزہ کی پٹی پر کے حالات پر ہے۔ غزہ کی پٹی پر بڑے پیمانے پر جنگی کارروائیاں جاری ہیں۔ ذرائع کے مطابق قطر اسرائیلی ردعمل کا انتظار کر رہا ہے۔

زمین پر حماس تحریک کے عسکری ونگ القسام بریگیڈز نے آج کہا کہ اس نے غزہ کی پٹی کے ایک محلے میں گھات لگا کر کئی اسرائیلی فوجیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ القسام بریگیڈز نے ایک مختصر بیان میں بتایا کہ اس نے شیخ عجلین کے علاقے میں اسرائیلی فوج پر گھات لگا کر حملہ کیاتھا۔

بعد ازاں القسام بریگیڈز کے فوجی ترجمان ابو عبیدہ نے کہا کہ تحریک کے جنگجوؤں نے پٹی میں اسرائیلی زمینی کارروائی کے آغاز کے بعد سے 136 اسرائیلی فوجی گاڑیوں کو "مکمل یا جزوی طور پر" تباہ کر دیا ہے۔

ابو عبیدہ نے مزید کہا کہ یرغمالیوں کی رہائی کا واحد راستہ قیدیوں کا جامع یا جزوی طور پر تبادلہ کرنے کا معاہدہ ہے۔ اسرائیل غیر ملکی شہریوں کے قیدیوں کو حوالے کرنے کی تمام کوششوں میں رکاوٹ بن رہا ہے۔

بدھ کو حماس کے رہنما اسامہ حمدان نے لبنانی دارالحکومت بیروت سے اپنی روزانہ کی پریس کانفرنس میں کہا کہ اسرائیل فلسطینی شہریوں سے انتقام لے کر اور "صدی کے قتل عام" کا ارتکاب کرکے القسام بریگیڈز کے سامنے اپنی فوجی ناکامی کا جواز پیش کر رہا ہے۔ اسامہ حمدان نے کہا کہ اسرائیل نے غزہ کی پٹی کے اندر کوئی پیش رفت نہیں کی ہے اور وہ غزہ کی پٹی کے مختلف علاقوں پر بار بار بمباری جاری رکھے ہوئے ہے۔

اسامہ نے کہا کہ حماس کے جنگجوؤں نے بدھ کے روز ایک سینئر اسرائیلی افسر کو ہلاک کر دیا ہے۔ انہوں نے اس بات کی تردید کردی کہ حماس نے ہسپتالوں کو فوجی ہیڈکوارٹرز کے طور پر استعمال کیا ہے۔ اسامہ حمدان نے کہا کہ غیر ملکی قیدیوں کی رہائی کے لیے حماس تیاری کررہی ہے۔ حمدان نے واشنگٹن سے مطالبہ کیا کہ وہ جنگ کے بعد غزہ پر حکومت کرنے کی منصوبہ بندی بند کردے۔

حماس رہنما باسم نعیم نے اپنے خطاب میں کہا کہ اسرائیل غزہ کے مکینوں کو زبردستی بے گھر کرنے کے لیے آبی ہتھیاروں کا استعمال کر رہا ہے۔ انہوں نے خوراک کی تقسیم میں کمی اور غزہ کی پٹی کے شمالی علاقوں میں خاص طور پر آبادی میں بھوک کے پھیلاؤ کے بارے میں بھی بات کی۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل ہسپتالوں اور صحت کے مراکز پر بمباری کر رہا اور صحت کی سہولیات کو چلانے کے لیے درکار ایندھن کو مسلسل روک رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں