فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل جنگ کو لمبا نہ کرے، لمبی جنگ مشکل ہو سکتی ہے۔ امریکی فوجی عہدے دار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی فوج کے ایک اعلیٰ ذمہ دار نے اسرائیل کو جنگ لمبی نہ کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ امریکی جرنیل کے مطابق جنگ لمبی کی گئی تو مشکلات بڑھ سکتی ہیں، جنگی طوالت کی صورت میں حماس کو مزید حمایت ملنا شروع ہو جائے گی۔ نیز مزید لوگ حماس میں جنگجو بن کے شامل ہو سکتے ہیں۔

امریکی جرنیل چارلس کیو براؤن چئیرمین آف جوائنٹ چیفس آف سٹاف ہیں۔ انہوں نے اسرائیل کی طرف سے حماس کی تباہی کو اپنا ہدف بتانے پر بھی تاثر دیا جیسے یہ ایک بہت بڑا ٹاسک ہے، تاہم انہوں نے حماس کی قیادت کو نشانہ بنانے کی اسرائیلی حکمت عملی کے حوالے سے کہا ' ہو سکتا ہے کہ اس سے کچھ زیادہ اور تیزی سے حاصل کیا جا سکے۔ '

امریکی اعلیٰ فوجی ذمہ دار نے اسرائیل فوج کے عوام اور میڈیا سے رابطے کو بھی بہتر بنانے کی بات کی کہ انہوں نے اپنے اسرائیلی ہم منصب سے اس بارے میں بات کی ہے اور کہا ہے اہم بات یہ ہے کہ ہم چیزوں کو کیسے پیش کر رہے ہیں۔

امریکی جنرل براؤن نے ایک ماہ زیادہ پر پھیلی جنگ کے بارے میں رپورٹرز سے پہلی بار بات کرتے ہوئے کہا 'میرے خیال میں جنگ کے طویل ہو جانے سے جنگ مشکل ہو سکتی ہے۔' اسی جنگ کے بارے میں بدھ کے رو سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے شہری ہلاکتوں کی اتنی زیادہ تعداد کے باعث کہا تھا' اس سے ظاہر ہوتا ہے اسرائیلی فوجی کارروائی کچھ واضح طور پر غلط ہے۔' تاہم جنرل براؤن جنہوں نے اعلیٰ امریکی فوجی منصب ایک ماہ پہلے سنبھالا ہے نے بڑے اعتماد کے ساتھ کہا ' اسرائیل غزہ میں جنگی قوانین کی پابندی کر رہا ہے۔'

ان کا کہنا تھا ' اسرائیلی فوج میں اس چیز کی بہتری کے لیے گنجائش ہے کہ عوام کے سامنے اس کے رویے کے بارے میں کی وضاحتیں بہتر ہوں۔ ان کے بقول انہوں نے یہ بات اپنے اسرائیلی ہم منصب کو بھی کہی ہے۔'

اس بارے میں انہوں نے مزید کہا ' بہتری کی گنجائش اس بنیاد پر ہونی چاہیے کہ ہم کیا دیکھ رہے ہیں، میں نے انہیں کہا ہے کہ ہم یہ چیز جو ہو رہی ہے اسے لوگوں کے سامنے ظاہر کیسے کرتے ہیں۔ اصل ضرورت یہ ہے۔ ہم حملوں کے حوالے سے یہ صرف ویڈیوز کے ذریعے نہیں بلکہ گفتگووں میں بھی بہتر کیا جا سکتا ہے۔'

جب امریکی جنرل سے یہ پوچھا گیا کہ آیا وہ تشویش میں ہیں کہ فلسطینی شہریوں کی اتنی بڑی تعداد کی وجہ سے لوگوں کو عسکریت پسندوں کے ساتھ شامل ہونے کی طرف دھکیلا جا رہا ہے؟ '

'ہاں ایسا بہت زیادہ ہو سکتا ہے۔۔ تیزی سے آپ اس مقام پر پہنچ سکتے ہیں کہ لوگوں کی ناراضگی کو روکیں۔ تیز لڑائی اس عمل کو کم کرنے کا باعث بنتا ہے جو عام لوگوں میں حماس کا اگلا ممبر بننے کی صورت دیکھتے ہیں۔ '

ادھر اسرائیل غزہ میں لمبی اور مشکل جنگ لڑنے کو تیار ہے۔ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے اپنے لوگوں کو بھی خبردار کیا ہے کہ 'ملک ایک سخت اور مشکل جنگ میں ہے اور یہ جنگ طویل بھی ہو سکتی ہے۔'

جنرل براؤن نے اس بارے میں بات کرنے سے خود کو روک لیا ' کہ اسرائیل کو غزہ میں کتنا طویل آپریشن کرنا چاہیے؟ جنرل براؤن مشرق وسطیٰ میں فضائی کارروائیوں کی نگرانی کر رکھی ہے۔ خصوصاً عراق جنگ میں داعش کے عسکریت پسندوں خلاف کارروائیوں کے دوران۔

اس پس منظر کے ساتھ ان کا کہنا تھا فوجی مہمات توقع سے زیادہ طویل ہو جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا 'میں نے عملی طور پر قدرے لمبے عرصے تک اس طرح کے واقعات کا تجربہ کیا ، اتنا تجربہ جتنا عام طور پر بہت زیادہ لوگ سوچتے بھی نہیں ہیں۔'

مقبول خبریں اہم خبریں