ھنیہ اور مشعل مصر پہنچ گئے، حکام سے غزہ پر بات چیت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیل اور فلسطینی گروپوں کے درمیان جنگ جمعرات کو 34 ویں روز بھی جاری رہی۔ غزہ پر اسرائیلی بربریت میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 10812 ہوگئی ہے۔ جمعرات کو تحریک حماس کے پولیٹیکل بیورو کے سربراہ اسماعیل ھنیہ کی مصر آمد کا اعلان کیا گیا۔ اپنے اس دورے میں اسماعیل ھنیہ مصری حکام سے غزہ کی صورت حال پر تبادلہ خیال کریں گے۔

حماس نے ایک بیان میں کہا کہ ھنیہ ایک وفد کے ساتھ مصر پہنچے ہیں جس میں خالد مشعل اور خلیل الحیہ بھی شامل تھے جمعرات کی صبح انہوں نے مصری انٹیلی جنس سروس کے سربراہ میجر جنرل عباس کامل سے ملاقات کی اور غزہ کی پٹی کی موجودہ صورتحال پر گفت و شنید کی۔

دوسری جانب ایک امریکی عہدیدار نے تصدیق کی ہے کہ سی آئی اے کے ڈائریکٹر ولیم برنز نے جمعرات کو دوحہ میں اسرائیلی انٹیلی جنس سروس ’’موساد‘‘ کے سربراہ اور قطری وزیر اعظم شیخ محمد بن عبدالرحمن الثانی سے ملاقات کی ہے

۔ اس ملاقات میں حماس کے ہاتھوں یرغمالیوں کی رہائی پر بات چیت کی گئی۔

رائٹرز کے مطابق امریکی عہدیدار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست پر کہا کہ اجلاس ہوا اور سی آئی اے ڈائریکٹر برنز نے اس میں شرکت کی تھی۔ خبر رساں ادارے نے اس ملاقات کی مزید تفصیلات نہیں بتائی ہیں۔

وائٹ ہاؤس نے جمعرات کو اعلان کیا ہے کہ اسرائیل نے شمالی غزہ میں روزانہ چار گھنٹے کے لیے جنگ میں وقفہ کے نفاذ پر رضامندی ظاہر کردی ہے تاکہ رہائشیوں کو جنگ کی روشنی میں جنوب کی طرف جانے کی اجازت دی جا سکے۔

قومی سلامتی کونسل کے ترجمان جان کربی نے صحافیوں کو بتایا کہ اسرائیل غزہ کے شمالی علاقوں میں ہر روز 4 گھنٹے کی مدت کے لیے جنگ بندی کا نفاذ شروع کرے گا۔ وقفہ سے تین گھنٹے قبل اس سے آگاہ کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں