غزہ جنگ آپ کو ہمارے ووٹوں سے محروم کر دے گی: مظاہرین کی بائیڈن کو دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ کی پٹی پر جاری جنگ کے درمیان صدر جو بائیڈن امریکی ملازمتوں کے معاملہ کے متعلق بات کرنے کے لیے شکا گو پہنچے۔ اس دورے کا غزہ میں سات اکتوبر سے جاری جنگ سے کوئی تعلق نہیں تھا تاہم امریکی اخبار ’’پولیٹیکو‘‘ کے مطابق امریکی صدر نے خود کو ایک ہزار سے زیادہ فلسطینی حامی مظاہرین میں گھرا ہوا پایا۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ مظاہرین کی ایک بڑی تعداد نے بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر ’’نسل کشی کا ماحول‘‘ اور ’’ہم فلسطین کے ساتھ کھڑے ہیں‘‘ کی عبارات درج تھیں۔

مظاہرین نے اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے لیے دباؤ ڈالنے کا بھی مطالبہ کیا۔ مظاہرین نے چیختے ہوئے کہا ہم یہ یاد رکھیں گے جو بائیڈن، اگلے نومبر میں آپ کو ووٹ نہیں ملیں گے۔

اخبار ’’پولیٹیکو‘‘نے تصدیق کی کہ بائیڈن کے واقعے سے چند گھنٹے قبل 100 سے زائد مظاہرین شہر بوسٹن کے ایک لگژری ہوٹل کے باہر بھی جمع ہوئے تھے۔ ان مظاہرین کا مقصد نائب صدر کملا ہیریس سے بھی ایسا ہی کرنے کا تھا۔

یاد رہے ان احتجاجی مظاہروں کے ساتھ ساتھ وائٹ ہاؤس کی جانب سے اسرائیل کی جانب سے غزہ میں انسانی بنیادوں پر عارضی جنگ بندی کی منظوری کا اعلان بھی کیا گیا ہے۔ اس اعلان کے مطابق اسرائیل نے ہر روز 4 گھنٹے کے لیے شمالی غزہ میں جنگ میں وقفہ پر رضامندی ظاہر کی ۔ جنگ میں اس وقفے کا مقصد لوگوں کو نقل مکانی میں سہولت پہنچانا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ بلینکن نے ’’روزانہ جنگ میں وقفہ‘‘ کا خیر مقدم کیا اور کہا یہ وقفہ غزہ کے باسیوں کو شمال سے جنوب کی طرف جانے کا موقع فراہم کرے گا۔

واضح رہے فلسطینی وزارت صحت نے جنگ کے 35 ویں دن صحت کے اہلکاروں کو نشانہ بنائے جانے کے حوالے سے تفصیل سے آگاہ کیا اور بتایا کہ اسرائیلی حملوں میں 195 صحت کے اہلکار ہلاک اور 51 ایمبولینسیں تباہ ہوگئی ہیں۔ اسرائیلی فوج نے 130 صحت کے اداروں کو نشانہ بنایا اور 18 ہسپتالوں اور 46 مراکز صحت کو نشانہ بنایا۔ ایندھن ختم ہونے کی وجہ سے صحت کے مراکز کو خدمات سے محروم کردیا گیا۔

سات اکتوبر کو شروع اس جنگ میں 1400 سے زیادہ اسرائیلی ہلاک ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی حکام کے مطابق حماس نے 240 اسرائیلیوں اور غیر ملکیوں کو یرغمال بھی بنایا۔ 27 اکتوبر کو اسرائیل نے غزہ میں زمینی کارروائی بھی شروع کر رکھی ہے۔

جنگ کے 35 ویں روز بھی صہیونی جارحیت جاری رہی۔ فلسطینی وزارت صحت کے مطابق اب تک 11078 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔ شہدا میں 4506 بچے اور 3027 خواتین شامل ہیں۔ مغربی کنارے میں جنگ کے آغاز سے اب تک 35 دنوں میں 180 فلسطینیوں کو شہید کیا جا چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں